حکومت بجٹ میں کاروباری خواتین کے لیے خصوصی پیکج دے،ویمن چیمبر

حکومت بجٹ میں کاروباری خواتین کے لیے خصوصی پیکج دے،ویمن چیمبر

لاہور( کامرس رپورٹر)ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی مرکزی رہنماء و سابق صدر شازیہ سلیمان نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ آئندہ مالی سال برائے 2018-19کے جبکہ ایکسپورٹ کی شرح میں اضافہ کے لیے ٹیکسز کی شرح میں کمی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ انکم ٹیکس، سیلز ٹیکس ویلتھ ٹیکس اور دیگر بے شمار ٹیکسوں اور ڈیوٹیوں کی وصولی کے بعد بینکوں سے لین دین پر ود ہولڈنگ ٹیکس کا جواز ہی باقی نہیں رہتا اس لیے حکومت بینکنگ سروسز پر ودہولڈنگ ٹیکس کو ختم کرے جس پر پوری تاجر و صنعتکار برادری کے تحفظات ہیں۔شازیہ سلیمان کا کہنا تھا کہ ایف بی آر کی ناقص اور سخت قوانین و پالیسی کی بدولت اس وقت آبادی کاصرف تین فیصد حصہ موجودہ سیلز ٹیکس کی شرح میں حصہ ڈال رہا ہے جو کہ ناکافی ہے اگر وزارت خزانہ بجٹ میں سیلز ٹیکس کی شرح میں کمی کرے تو اس سے حکومت کو زیادہ ریونیو مل سکے گا اور عوام خوشی سے ٹیکس کی ادائیگیوں میں اپنا حصہ ڈالیں گے۔انہوں نے کہا کہ ٹیکس دینا ہر پاکستانی کا بنیادی حق ہے۔انہوں نے کہاکہ کاروبار خواتین کو امید ہے کہ وفاقی حکومت آئندہ مالی سال کے بجٹ میں خواتین کی بہتری اور کاروبار میں آسانیوں کے لیے خصوصی اقدامات اٹھائے گی۔

مزید : کامرس