سر اور لے کوجاننے والا ہی بڑا گلوکار بنتا ہے، گلوکارشیراز علی

سر اور لے کوجاننے والا ہی بڑا گلوکار بنتا ہے، گلوکارشیراز علی
سر اور لے کوجاننے والا ہی بڑا گلوکار بنتا ہے، گلوکارشیراز علی

  

لاہور(فلم رپورٹر) معروف کلاسیکل گائیک شیراز علی نے کہا ہے کہ سر اور لے کوجاننے والا ہی بڑا گلوکار بنتا ہے اوراسی کو دنیا پیار کرتی ہے ،پاکستان میں کلاسیکی موسیقی کے چاہنے والے آہستہ آہستہ کم ہوتے جارہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ غزل گائیکی میں استاد برکت علی خان ، مہندی حسن ، فریدہ خانم اور میڈم نور جہاں کی شخصیت سے بہت متاثرہوں یہ سچے سروں کے ساتھ گاتے تھے جبکہ بھارت میں آشابھوسلے اورلتاجی کمال کی فنکارہ ہیں مگری میر ی ذاتی رائے ہے کہ ہر پھول کی مختلف خوشبو ہوتی ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ مہذب معاشرے کے لئے ہر فرد کا تعلیم یافتہ ہونا ضروری ہے ،جن ممالک میں تعلیم کی شرح سب سے زیادہ رہی ان اقوام نے دنیا میں اسی رفتار سے ترقی بھی کی ہے۔ شیراز علی نے کہا کہ مسلمانوں کا آگے بڑھنے کے لئے تعلیم یافتہ ہونا ضروری ہے اور اسی لئے سکولز ، کالجز اور یونیورسٹیاں بنائیں جبکہ اس وقت کے دیگر سیاسی رہنماں نے بھی اس بات کو بھانپ لیا تھا کہ مسلمانوں کی ترقی کے لئے تعلیم کا حصول لازمی ہے۔

مزید : کلچر