نشتر،ایم بی بی ایس امتحانات کیلئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز سے معاہدہ کی منظوری

نشتر،ایم بی بی ایس امتحانات کیلئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز سے معاہدہ کی ...

ملتان (وقائع نگار) نشتر میڈیکل یونیورسٹی کی اکیڈمک کونسل نے ایم بی بی ایس کے امتحانات کے لئے عارضی طور پر یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز سے معاہدہ کرنے کی منظوری دے (بقیہ نمبر49صفحہ12پر )

دی ہے،اس حوالے سے حکومت کو نشتر میڈیکل یونیورسٹی حکام کی جانب سے یاد دہانی کا لیٹر بھی بھجوانے کا کہا گیا ہے کہ یونیورسٹی کے لئے فوری فنڈز جاری کئے جائیں تاکہ یونیورسٹی اپنے طور پر ایم بی بی ایس اور بی ایس نرسنگ اور دیگر پوسٹ گریجویٹ پروگراموں کے امتحانات لے سکے،اس کی منظوری گزشتہ روز اکیڈمک کونسل کے اجلاس میں دی گئی جس کی صدارت وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ظفرحسین تنویر نے کی، اجلاس میں تمام شعبوں کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹرز نے شرکت کی، اجلاس میں نشتر یونیورسٹی کے تحت ایم بی بی ایس پارٹ فرسٹ اور بی ایس نرسنگ کی رجسٹریشن اور نشتر کے تحت امتحانات کے انعقاد کا جائزہ لیا گیا، اجلاس میں بتایا گیا کہ نشتر یونیورسٹی کو تاحال فنڈز نہیں مل سکے جس کی وجہ سے سردست یہ ممکن نہیں ہے،فنڈز کے حصول کے بعد ہی رجسٹریشن اور امتحانات لئے جاسکیں گے، اس موقع پر تجویز دی گئی کہ امتحانات کیلئے تین سال کے لئے یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز سے معاہدہ کرلیا جائے،تاہم اکیڈمک کونسل کے اراکین کی اکثریت نے اس کی مخالفت کی جس کے بعد یہ طے پایا کہ سردست موجودہ سال کے لئے معاہدہ کرلیا جائے اور فنڈز کیحصول کے لئے کوششیں کی جائیں جس پر اس کی منظوری دے دی گئی،اجلاس میں سرجری، میڈیسن اور کمیونٹی میڈیسن کے فیکلٹی ممبرز کا انتخاب بھی کیا گیا،اجلاس میں نشتر ہسپتال میں غیر معیاری ادویات کی فراہمی کا معاملہ بھی زیربحث لایا گیا، اجلاس میں ذرائع کے مطابق اکیڈمک کونسل کے ممبر پروفیسر ڈاکٹر افتخار نے نشتر انتظامیہ کی جانب سے مختلف شعبوں میں فراہم کردہ ڈرپس کی بوتلیں پیش کیں،جن میں مبینہ طور پر ذرات نظر آرہے تھے اور ان مبینہ غیر معیاری ڈرپس کی وجہ سے مریضوں میں ری ایکشن کی شکایات سامنے آرہی ہیں،اس پر ایم ایس نشتر کو اکیڈمک کونسل میں بلا لیا گیا جنہیں مذکورہ ڈرپس دکھائی گئیں،اس پر انہوں نے فارماسسٹ کو اجلاس میں طلب کرلیا، مگر بتایا گیا کہ وہ دستیاب نہیں ہیں، اس پر اکیڈمک کونسل نے ایم ایس نشتر کو اس معاملہ کی چھان بین کرنے اور ان ڈرپس کو چیک کرانے کی ہدایت کی۔

نشتر اکیڈمک کونسل

مزید : ملتان صفحہ آخر