جگر کے امراض کی روک تھام ، 120ہیپاٹائٹس کلینکس قائم کرنے کا فیصلہ

جگر کے امراض کی روک تھام ، 120ہیپاٹائٹس کلینکس قائم کرنے کا فیصلہ

لاہور(جنرل رپورٹر) سیکرٹری سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر اینڈ میڈیکل ایجوکیشن نجم احمد شاہ نے کہا ہے کہ صوبے سے ہیپا ٹائٹس کی بیماری کے مکمل خاتمے اور جگر و گردوں کے امراض پر قابو پانے کے لئے محکمہ سپیشلائزڈ ہیلتھ کئیر، پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر ، پاکستان کڈنی اینڈ لیور انسٹیٹیوٹ ، پنجاب ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام اور دیگر سپیشلائزڈہیلتھ کئیر کے ادارے ایک مشترکہ حکمت عملی کے تحت کام کریں گے جس کے لئے مربوط لائحہ عمل ترتیب دیا جارہا ہے۔انہوں نے یہ بات اپنے دفتر میں پنجاب میں ہیپاٹائٹس کے خاتمے اور گردے و جگر کی بیماریوں کی روک تھام اور علاج کی سہولیات کے بارے میں تمام سٹیک ہولڈرز کے اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اجلاس میں پاکستان کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹیشن اینڈ ریسرچ سینٹر کے صدر ڈاکٹر سعید اختر ، PKLIکے ماہرین کی ٹیم، سپیشل سیکرٹری ہیلتھ ڈویلپمنٹ عثمان معظم ، چیف ایگزیکٹو انفراسٹکچر ڈویلپمنٹ اتھارٹی ( IDAP) مجاہد شیر دل ، ایڈیشنل سکریٹری ڈویلپمنٹ شاہد رحمان، چیف پلاننگ آفیسر عبدلحق بھٹی ، پرنسپل پوسٹ گراجوایٹ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ /لاہور جنرل ہسپتال پروفیسر غیاث النبی طیب ، ڈپٹی پروگرام منیجر ہیپا ٹائٹس کنٹرول پنجاب محکمہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ ڈاکٹر شعبان، چیف ایگزیکٹو انٹرنل پالیسی اینڈ سٹریٹیجک پلاننگ یونٹ پروفیسر احسن وحید راٹھور اور دیگر افسران نے شرکت کی۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ مجموعی طور پر 2626260لوگوں کی ہیپاٹائٹس بی کی ویکسنیشن کی گئی ہے ۔ سیکرٹری نجم احمد شاہ نے کہا کہ تمام متعلقہ اداروں کا سکوپ آف ورکنگ متعین کیا جائے اور PKLIکے علاوہ ملتان ، بہاولپور، راولپنڈی اور دیگر شہروں میں یورا لو جی اور کڈنی کے علاج کے لئے قائم کئے گئے اداروں کو بھی آن بورڈ لیا جائے تاکہ مذکورہ ہسپتالوں میں آنے والے مریضوں کے ا عداد و شمار بھی حاصل کئے جاسکیں۔ نجم احمد شاہ نے بتایا کہ ٹیچنگ ہسپتالوں میں 17گیسٹرو انٹرالوجی کے یونٹس قائم کئے جارہے ہیں جس پر اربوں روپے خرچ ہوں گے، علاوہ ازیں ملتان انسٹیٹیوٹ آف کڈنی ڈزیزز اوربہاولپورکڈنی سینٹر اڑھائی اڑھائی ارب روپے کی لاگت سے مکمل کئے گئے ہیں جبکہ راولپنڈی انسٹیٹیوٹ آف یورالوجی ساڑھے تین ارب روپے کی لاگت سے تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ صوبے میں 120ہیپاٹائٹس کلینک قائم کررہا ہے جبکہ PKLIنے بھی تمام اضلاع میں ہیپاٹائٹس فلٹر کلینکس قائم کئے ہیں۔ سکریٹری نجم شاہ نے ہدایت کی کہ تمام متعلقہ اداروں کا سکوپ آف ورک طے کرکے ایک ورکنگ پیپر تیار کیا جائے تاکہ ہیپاٹائٹس پر قابو پانے کے لئے تمام متعلقہ سٹیک ہولڈرز مشترکہ حکمت عملی کے ساتھ ایک مربوط پروگرام پر عمل درآمد کا آغاز کرسکیں ۔ نجم احمد شاہ نے کہا کہ اس مقصد کے لئے جو بھی فنڈ درکار ہوں گے حکومت فراہم کرے گی ۔

سیکرٹری سپیشلائزڈ

مزید : میٹروپولیٹن 1