وفاقی کابینہ کا اجلاس آج ، ای سی ایل میں نام ڈالنے اور نکالنے کی نئی پالیسی کی منظوری متوقع

وفاقی کابینہ کا اجلاس آج ، ای سی ایل میں نام ڈالنے اور نکالنے کی نئی پالیسی کی ...

اسلام آباد( آن لائن ) وفاقی کابینہ کا اہم اجلاس آج بدھ کو وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی صدارت میں ہو رہا ہے جس میں شریف خاندان کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے سے متعلق قومی احتساب بیورو کی درخواست کا جائزہ لیا جائے گا اور ساتھ ہی ای سی ایل میں نام ڈا لنے اور نکالنے کی نئی پالیسی بھی منظور کی جائیگی، وزیر داخلہ احسن اقبال نے سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کی ای سی ایل پالیسی کو یکسر مسترد کرتے ہوئے اپنے اور اپنے سیکرٹری داخلہ کیلئے اختیارات مانگ لئے ہیں، دوسری طرف وزارت توانائی بھی وفاقی کابینہ کو بتانے جا ر ہی ہے گرمیوں میں لوڈ شیڈنگ مکمل ختم نہیں ہوگی جہاں ریکوری اسی فیصد سے زیادہ ہوگی وہی علاقے لوڈ شیڈنگ سے مستثنیٰ ہونگے ورنہ شہر و ں میں چار سے چھ اور دیہاتوں میں آٹھ گھنٹے سے بھی زیادہ لوڈ شیڈنگ ہو سکتی ہے۔ وزارت داخلہ کے ذرائع کا کہنا ہے سابق وزیر داخلہ چو ہدری نثار علی خان دور کے سات سو ای سی ایل کیسز بھی کابینہ میں توثیق کیلئے پیش ہونگے کیونکہ وزارتی کمیٹی کے فیصلوں کو موجودہ وزیر دا خلہ اہمیت دینے کو تیار نہیں اور انہوں نے چوہدری نثار کی ای سی ایل پالیسی پر عملدرآمد کو روک دیا تھا اب جبکہ نیب نے احتساب عدالت میں زیر سماعت شریف خاندان کیخلاف ریفرنسز میں نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کے نام ای سی ایل میں ڈالنے کی کئی بار درخوا ست کی ہے اور وزارت داخلہ کو کئی خطوط بھی لکھے ہیں تو احسن اقبال یہ معاملہ وفاقی کابینہ میں لیکر جا رہے ہیں اور ساتھ ہی انہوں نے کابینہ سے یہ اختیار بھی مانگا ہے کہ ای سی ایل میں نام ڈالنے کا اختیار وزیر داخلہ یا سیکرٹری داخلہ کو ہونا چاہیے کسی کمیٹی کی کوئی ضرورت نہیں ،ذرائع نے مزید بتایا کہ وفاقی کابینہ کو وزارت خارجہ کے اہم معاملات کے بارے میں بھی آگاہ کیا جائے گا خاص کر پاکستان کے سفارتکاروں کی نئی دہلی میں ہرا سگی کا معاملہ بھی زیر غور آئے گا جبکہ صارفین کیلئے بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کی خوشخبری بھی صرف نام کی خوشخبری ہے کیونکہ وزارت نے نیا لوڈ مینجمنٹ پلان کابینہ میں منظوری کیلئے پیش کرنا ہے۔

ای سی ایل پالیسی

Bac

مزید : صفحہ اول