غوطہ: بمباری سے مزید 20شہری جاں بحق، ہلاکتوں کی تعداد 1400سے بڑھ گئی

غوطہ: بمباری سے مزید 20شہری جاں بحق، ہلاکتوں کی تعداد 1400سے بڑھ گئی

واشنگٹن /انقرہ / دمشق(اے این این) شامی فوج کی مشرقی علاقے غوطہ میں بمباری سے مزید 20 شہری جاں بحق اور درجنوں زخمی ہوگئے۔ بمباری سے اب تک مشرقی غوطہ میں ہلاکتیں 14سو سے زائد ہوگئی ہیں جن میں 281بچے شامل ہیں۔ ادھر ترکی نے دھمکی دی ہے کہ وہ مشرقی غوطہ کے دیگرعلاقوں میں بھی کردباغیوں کے خلاف آپریشن کریں گے۔جرمنی میں کردبرادری کی نمائندہ تنظیم (کے جی ڈی)نے شامی شہرعفرین پر ترک قبضے کے بعد یورپ کی جانب سے ثالثی کی تجویز پیش کی ہے۔کے جی ڈی کے مطابق یورپی مصالحت کاری سے یہ جنگ تیزی سے یا مکمل طور پرختم ہوسکتی ہے۔ مزید یہ کہ ساتھ ہی انقرہ کوایک واضح اشارہ بھی دیا جائے تاکہ شمالی شام میں دوبارہ سے ایک جمہوری اور خود مختار حکومت قائم ہو سکے۔ امریکا نے عفرین میں ترک فوج کی بمباری پرتشویش کا اظہارکیا ہے۔امریکا نے ترکی کو خبردارکیا ہے کہ اس کی کارروائی کے باعث ہزاروں شہری انخلا پر مجبور ہورہے ہیں۔امریکی حکام نے کہا کہ عفرین میں لوٹ مار بھی جاری ہے۔شامی شہرعفرین میں برطانوی جنگجو خاتون اینا کیمپبیل کردملیشیا کی جانب سے ترکی کے خلاف لڑتے ہوئے ہلاک ہوگئیں۔ترجمان کردش وومین پروٹیکشن یونٹ نسرین عبداللہ کے مطابق 26 سالہ برطانوی شہری اینا کیمپ بیل گذشتہ ہفتے عفرین میں ترکی کے حملے میں ہلاک ہوئیں۔ ایسٹ سیسکس کی رہائشی اینا کیمپ بیل کی ہلاکت کی اطلاع گذشتہ روز برطانیہ پہنچی اور ان کے والدین کو انکی موت کے بارے میں آگاہ کیا گیا، علاوہ ازیں شامی صدر بشار الاسد نے غوطہ کی سڑکوں پر ڈرائیونگ کی، بشار الاسد کا کہنا تھا تین ہفتے پہلے شروع ہونے والے ملٹری آپریشن میں باغیوں سے چھڑایا جانے والا یہ پہلا علاقہ ہے۔ روس اور شام کی فورسز نے مشترکہ آپریشن میں غوطہ کا اسی فیصد علاقہ باغیوں سے چھڑالیا، اس دوران پچیس ہزار افراد کو بحفاظت نکالا گیا جبکہ پندرہ سو افراد بمباری کی زد میں آکر جاں بحق ہوگئے۔شامی صدر بشارالاسد نے غوطہ کی سڑکوں پر ڈرائیونگ کی، ڈرائیو کے دوران شامی صدر کا کہنا تھا کہ النشابیہ ملٹری آپریشن میں باغیوں سے چھڑایا جانے والا پہلا علاقہ ہے، باغیوں کو شکست دینا عظیم فتح ہے، شامی صدر نے کہا یہاں اب زندگی نارمل ہو رہی ہے۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...