صدر ٹرمپ نے ویزویلا کی ڈیجیٹل کرنسی کو ممنوع قرار دے دیا

صدر ٹرمپ نے ویزویلا کی ڈیجیٹل کرنسی کو ممنوع قرار دے دیا

واشنگٹن(صباح نیوز)امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وینزویلا انتظامیہ کے ڈیجیٹل کرنسی یونٹ کے ساتھ تمام مالیاتی امور کو ممنوع قرار دے دیا ہے۔وائٹ ہاوس سے جاری کردہ بیان کے مطابق ٹرمپ نے وینزویلا کے خلاف پابندیوں کی توسیع پر مبنی حکم نامے پر دستخط کردیئے ہیں۔حکم نامے کے مطابق امریکی افراد پر اور امریکہ کے اندر آج سے ،وینزویلا حکومت کی طرف سے یا پھر ویزویلا حکومت کے نام پر 9 جنوری 2018 سے جاری کی جانے والی ڈیجیٹل کرنسی یونٹوں کے ساتھ تمام کاروائیوں کو ممنوع قرار دے دیا گیا ہے۔بیان کے مطابق یہ پابندی حقیقی اور قانونی شخصیات دونوں کا احاطہ کرتی ہے اور امریکہ کی وزارت خزانہ پابندی کے موئثر اطلاق کے لئے ضروری اقدامات کرنے کا اختیار رکھتی ہے۔صدر ٹرمپ کی طرف سے پابندی کا یہ فیصلہ وینزویلا کی "پیٹرو" نامی ڈیجیٹل کرنسی کی ابتدائی فروخت کے آخری دن جاری کیا جانا توجہ کا مرکز بنا ہے۔واضح رہے کہ وینزویلا نے امریکہ کی طرف سے عائد پابندیوں پر قابو پانے اور اقتصادیات میں تازگی لانے کے لئے 20 فروری کو ایک ماہ کی ابتدائی فروخت کے لئے پیٹرو ڈیجیٹل کرنسی کو مارکیٹ میں پیش کیا تھا۔

مزید : عالمی منظر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...