شانگلہ کے عوام کے ساتھ محکمہ واپڈا کا امتیازی سلوک جاری

شانگلہ کے عوام کے ساتھ محکمہ واپڈا کا امتیازی سلوک جاری

الپوری (ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ کے عوام کے ساتھ محکمہ واپڈا کا امتیازی سلوک جاری ۔کوٹکی گرڈ سٹیشن سے ضلعی ہیڈ کوارٹر الپوری نیا بچھانے والا لائن لیت و لعل کا شکار ۔گزشتہ عام انتخابات کے بعد لائن پر کام شروع ہونا تھا ، پانچ سال گزرنے کے باوجود نیا لائن نہ بچھایا جاسکا جبکہ اس حوالے سے کئی مرتبہ محکمہ واپڈا الپوری ڈویژن نے حکام کو لکھ دیا ہے ۔ عوامی حلقوں کا شدید احتجا ج ۔وفاقی وزیر پانی و بجلی اور وزیر اعظم کے مشیر انجینئر امیر مقا م سے فی الفور صورتحال پر نوٹس لینے کا مطالبہ کردیا۔ تفصیلات کے مطابق شانگلہ کے مین گریڈ سٹیشن سے ضلعی ہیڈ کوارٹر الپوری تک محکمہ واپڈا سے منظوری کے باوجود چوالیس مین پول سمیت بڑا لائن بچھانی تھی تاہم پانچ سال گزرنے کے باوجود اس پر عمل در امد نہ ہوسکا ۔ شانگلہ کے سماجی اور عوامی حلقوں نے اس صورتحال پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ 1994 میں آنے والے لائن پر لوڈ روز بڑھتا جارہا ہے ، مین ٹرانسمیشن لائن چوبیس سال گزرتے ہوئے بوسیدہ ہوچکی ہے اور کسی بھی وقت حادثہ رونما ہونے کا امکان موجود ہے ۔ ائے روز مین ٹرانسمیشن کے لائن ٹوٹ جاتی ہے جس کی وجہ سے تحصیل الپوری کے لاکھوں ابادی بجلی سے محروم ہوجاتی ہے اور وادی تاریکیوں میں ڈوب جاتی ہے ، محکمہ واپڈا اپنے منظور شدہ منصوبے میں ناکام کیوں نظر آرہی ہے ، سیاسی بنیادوں شانگلہ کے ایک حلقے کونئے بڑے پول اور ٹرانسمیشن لائن لگا دی گئی جبکہ زیادہ ابادی والے حلقے کو یکساں نظرا نداز کیا گیا جو یہاں سے منتخب نمائندوں کی بدنیتی اور علاقائی تعصب کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ عوامی حلقوں نے وفاقی وزیر برائے پانی و بجلی ، وزیر اعظم کے مشیر انجینئر امیر مقام اور پیسکو کے صوبائی چیف سے صورتحال کا نوٹس لینے اور منظور شدہ منصوبے پر کام فی الفور شروع کرنے کا مطالبہ کردیا ہے۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...