نوشہرہ ، قاضی میڈیکل کمپلیکس کے ماہر نفسیات کی ڈرائیور پر فائرنگ ، بابا بچ گیا

نوشہرہ ، قاضی میڈیکل کمپلیکس کے ماہر نفسیات کی ڈرائیور پر فائرنگ ، بابا بچ ...

نوشہرہ(بیورورپورٹ) قاضی میڈیکل کمپلیکس نوشہرہ کے ماہر نفسیات خود آپے سے باہر ہسپتال کے لئے فرنیچر لانے والی گاڑی ان کے موٹرکار سے ٹکرانے پر ڈاکٹر نے غریب ڈرائیور پر فائرنگ کرڈالی ڈرائیور بال بال بچ گیا فائرنگ کی آواز سنتے ہی ہسپتال میں موجود مریض دوڑتے ہوئے باہر نکال آئے ہسپتال کے کلاس فور عملے ،مریضوں ،ڈاکٹرز اور ہسپتال کے ملحقہ واقعہ میڈیکل کالج کی طلباء وطالبات میں شدید خوف وہراس ڈاکٹر کا غریب ڈرائیور پر راضی نامے کیلئے دباؤ نوشہرہ کلاں پولیس بھی ڈاکٹر کی حمایت میں کھود پڑے ڈاکٹر کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی بجائے غریب ڈرائیور کو راضی نامے کے مشورے تفصیلات کے مطابق منگل کے روز شہ زور گاڑی نمبری نامعلوم کے ذریعے ڈرائیور حمیداللہ نے قاضی میڈیکل کمپلیکس نوشہرہ کو باقی ماندہ فرنیچر لایا ہوا تھا فرنیچر ہسپتال انتظامیہ کے حوالہ کرنے کے بعد ڈرائیور حمیداللہ اپنی گاڑی ہسپتال سے باہر نکال رہا تھا کہ اس دوران شہ زورگاڑی غلطی سے قاضی میڈیکل کمپلیکس نوشہرہ کے ماہر نفسیات پروفیسر ڈاکٹر کامران کی گاڑی سے ٹکرا گئی جس پر ڈاکٹر کامران سیخ پا ہوگیا اور اپنی پستول نکال کر شہ زور گاڑی کے غریب ڈرائیور جو قاضی میڈیکل کمپلیکس کا فرنیچر لایاتھا پر فائرنگ شروع کی جس سے غریب ڈرائیور بال بال بچ گیا ہسپتال میں موجود کلاس فور ملازمین، ڈاکٹرز، مریض اور ان کے لواحقین ورشتہ دار فائرنگ کی آواز سنتے ہی ہسپتال کی عمارت سے باہر نکل آئے فائرنگ سے ہسپتال میں موجود تمام افراد اور قاضی میڈیکل کمپلیکس کے ساتھ ملحقہ میڈیکل کالج میں طلباء وطالبات میں شدید خوف وہراس پھیل گیا بعدازاں ہسپتال انتظامیہ شہ زور کے غریب ڈرائیور پر ڈاکٹر کے ساتھ راضی نامہ کرنے کیلئے دباؤ ڈالتے رہے جبکہ نوشہرہ کلاں پولیس بھی ہسپتال انتظامیہ کی ہاں میں ہاں ملاتے ہوئے ڈاکٹر کامران کی حمایت میں سرگرم دکھاتے دیتے رہے اور ڈاکٹر کامران کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی بجائے ڈرائیور کوراضی نامے کیلئے کبھی راضی اور دباؤ ڈالتے رہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر