چارسدہ ، تاجر سے لاکھوں ڈکیتی کیخلاف شاپ کیپر ز فیڈریشن کا احتجاجی مظاہرہ

چارسدہ ، تاجر سے لاکھوں ڈکیتی کیخلاف شاپ کیپر ز فیڈریشن کا احتجاجی مظاہرہ

چارسدہ (بیورو رپورٹ) غنی خان روڈ پر تاجر رہنماء سے دن دہاڑے 46لاکھ 30روپے چھینے کے خلاف متحدہ شاپ کیپرز فیڈریشن اور تاجر اتحاد سڑکوں پر نکل آئی۔ فاروق اعظم چوک سے سٹی تھانہ تک ریلی نکالی ۔ پولیس کے خلاف شدید نعرہ بازی۔تاجروں کو تحفظ دو یا حکومت چھوڑ دو کے نعرے ۔تفصیلات کے مطابق متحدہ شاپ کیپرز فیڈریشن کے مرکزی صدر حکیم اللہ فوجی کے بیٹے سے دن دہاڑے 46لاکھ 30ہزار روپے چھننے اور ڈاکوؤں کی عدم گرفتاری کے خلاف متحدہ شاپ کیپرز فیڈریشن اور تاجر اتحاد سڑکوں پر نکل آئی ۔ مظاہرین نے فاروق اعظم چوک سے سٹی تھانہ تک ریلی نکالی اور پولیس کے خلاف شدید نعرہ بازی کی ۔ مظاہرین نے وزیر اعلی پرویز خٹک کے خلاف بھی شدید نعرہ بازی کی اور ان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا ۔ قبل ازیں دونوں تنظیموں کا غیر معمولی اجلاس فاروق اعظم مسجد میں منعقد ہواجس میں سینکڑوں تاجروں نے شرکت کی ۔اجلاس میں تاجر تنظیموں کے رہنماؤں افتخار حسین ، لعل محمد لعل ، حاجی صدیق اللہ ، حبیب اللہ ، میاں مفرق شاہ ، میاں رحم بادشاہ ، سید صالح شاہ ، ملک ظفر ، وحید درانی اور دیگر نے واقعہ کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور روز ڈکیتی اور رہزنی کے وارداتوں پر شدید تحفظات کا اظہار کیا ۔ مقررین نے کہاکہ اس قسم کے واقعات کا رونماء ہونا پولیس کی ناکامی کا منہ بولتا ثبوت ہے جو حکومت کی مثالی پولیس ہونے کی نفی کر تا ہے۔مقررین نے کہا کہ تاجر ملک کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں مگر حکومت تاجروں کو تحفظ فراہم کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے ۔ یہ سلسلہ جاری رہا تو تاجر اور دیگر لوگ چارسدہ سے کاروبار منتقل کرنے پر مجبو ر ہونگے ۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ اگر پولیس نے 24گھنٹوں کے اندر اندر رہزنوں کو گرفتار نہ کیا تو تاجر تنظیمیں پولیس کے خلاف احتجاجی تحریک شروع کریگی ۔ اجلاس میں احتجاجی تحریک اور مذاکرات کیلئے دو مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئی جس میں حاجی صدیق اللہ ، حاجی ملک ظفر خان ، لعل محمد لعل ، میاں مفرق شاہ ، سید صالح شاہ ، میاں رحم باچہ ، ارشاد علی ، حاجی جہانزیب زرگر ، محمد عالم ، حاجی شیراز ، عالمگیر خان ، عطاء اللہ ، حبیب خان ، امداد اللہ ، حاجی ضیاء الدین ، حاجی عطاء الرحمان ، حاجی رحیم خان ، مزمل شاہ شامل۔ ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر