آزاد کشمیر پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ،پاورسیل ریکارڈ کی جانچ پڑتال

آزاد کشمیر پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ،پاورسیل ریکارڈ کی جانچ پڑتال

مظفرآباد (ڈسٹرکٹ رپورٹر) آزاد کشمیر پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس منگل کے روز بھی زیر صدارت چےئر مین کمیٹی چوہدری محمد اسحاق جاری رہا۔ اجلاس میں ممبران کمیٹی کرنل (ر) وقار احمد نُور، ڈاکٹر مصطفےٰ بشیر عباسی، عبدالماجد خان سمیت متعلقہ محکمہ جات کے حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں پاور ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن کے ذیلی ادارہ پرائیویٹ پاور سیل آزاد جموں و کشمیر کے ریکارڈ کی جانچ پڑتال کی گئی۔ کمیٹی نے کہا کہ آفیسران اپنی اتھارٹی کو کہیں بھی سرنڈر نہ کریں اور کوئی بھی عمل رولز ریگولیشنز سے ہٹ کر کسی کے کہنے پر نہ کریں۔ ہم چاہتے ہیں کے آفیسران کی رُولز ریگولیشنز کے تحت اتھارٹی واضح نظر آئے۔ پرائیویٹ پاور سیل کی نمائندگی ملک اسرار سیکرٹری پی ڈی او نے بحیثیت پرنسپل اکاؤنٹنگ آفیسر کی۔ نوید الظفر گیلانی ڈائریکٹر جنرل پرائیویٹ پاور سیل نے کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ آزاد جموں اینڈ کشمیر ہائیڈرو الیکٹرک بورڈ1989ء میں قائم ہوا، تاہم PDO Act, 2014کے تحت نام تبدیل ہوا اور پرائیویٹ پاور سیل پی ڈی او کا ذیلی ادارہ ہے اور 1996ء سے پرائیویٹ انویسٹرز کو پاور سیکٹر میں سہولیات بہم پہنچا رہا ہے۔ اُنہوں نے بتایا کہ اس وقت WUC 0.42/kwh روپے ہے۔ اُنہوں نے مزید بتایا کہ اوپریشنل پراجیکٹس 3ہیں جن سے 234.50میگاواٹ بجلی پیدا ہوتی ہے۔ اسکے علاوہ زیر تعمیر منصوبہ جات3جن کی تکمیل سے828.06میگاواٹ بجلی متوقع ہے اور انڈر پراسیس پراجیکٹس کی تعداد21ہے جنکی پیداواری صلاحیت 3122.19میگا واٹ ہو گی۔ گُلپور پراجیکٹ کے بارہ میں بتایا کہ اسکی گنجائش100.98میگا واٹ ہے، کیروٹ پراجیکٹ720میگا واٹ اور ریالی۔IIکی گنجائش7.08میگا واٹ ہے۔ واٹر ےُوز ریونیو کے بارہ میں بتایا کہ نیو بونگ ایسکیپ پاور ہاؤس652.583ملین روپے،khariپاور ہاؤس9.298ملین روپے اور پترینڈ پاور ہاؤس663.294 ملین روپے ہے۔ کمیٹی نے آڈٹ پیرا جات کے حوالے سے ہدایت کی کے پراگریس کے عمل کو تیز کیا جائے تاکہ مالیاتی ڈسپلن پر کوئی حرف نہ آئے۔کمیٹی کا اجلاس آج بھی جاری رہے گا جس میں محکمہ اوقاف کے ریکارڈ کی جانچ پڑتال کی جائے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر