پلاسٹک کی بوتلوں کی مشترکہ ری سائیکلنگ کمپنی کی رجسٹریشن کیلئے پیش رفت رپورٹ طلب

پلاسٹک کی بوتلوں کی مشترکہ ری سائیکلنگ کمپنی کی رجسٹریشن کیلئے پیش رفت ...

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پلاسٹک کی بوتلوں کے استعمال پر پابندی عائد کرنے کی درخواست پر پیپسی،پیکجز، کوکا کولااورنیسلے کے اشتراک سے پلاسٹک ری سائیکلنگ کمپنی رجسٹرڈ کروانے کے معاملہ پر پیش رفت رپورٹ طلب کر لی،عدالت کو ان کمپنیوں کی طرف سے بتایا گیا کہ یہ کمپنیاں پلاسٹک کی بوتلوں کی ری سائیکلنگ کے لئے ایک مربوط کمپنی بنانے جارہی ہیں،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو سلمان اکرم راجہ ایڈووکیٹ عدالت کی معاونت کے لئے پیش ہوئے۔ انہوں نے بتایاکہ”PET“ بوتل کے استعمال سے متعلق تین ملٹی نیشنل کمپنیوں سے میٹنگ ہوئی ہے، پیٹ بوتل، شیمپو اور دیگر پلاسٹک بوتلیں یہ سب ایک دوسرے سے جڑی ہوئی ہیں، بین الاقوامی سطح پر ان پلاسٹک بوتلوں کے استعمال پر پابندی عائد نہیں کی جاتی بلکہ ان کوری سائیکل کیا جاتا ہے، پلاسٹک کی بوتلوں کی ری سائیکلنگ کمپنیاں خود کر رہی ہیں جبکہ حکومت کو بھی اس کیلئے متحرک ہونا چاہیے،ڈبلیو ڈبلیو ایف کی رپورٹ کے مطابق ری سائیکلنگ کے بعد پلاسٹک بوتلوں سے پلاسٹک کرسیاں اور دیگر اشیا بنتی ہیں، حکومت پلاسٹک کی بوتلوں کی ری سائیکلنگ کے لائسنس جاری کرے، فاضل جج نے کہا کہ نیسلے کمپنی نیدر لینڈ میں پلاسٹک بوتلوں کی ری سائیکلنگ کیلئے کیا کرتی ہے؟ سلمان اکرم راجہ اس کاجواب گول کرگئے اور کہا کہ پیپسی نے پلاسٹک کی بوتلوں کی کولیکشن کے لئے اپنے پوائنٹس بنائے ہیں، پلاسکٹ بیگز ری سائیکل نہیں ہوتے باقی تمام بوتلیں ری سائیکل ہو تی ہیں، دنیا بھر میں پلاسٹک کی بوتلوں کو ری سائیکل کیا جاتاہے اور بائیو ڈی گریڈ ایبل میٹریل میں تبدیل کیا جاتا ہے، پیپسی، پیکجز، نیسلے اور کوکا کولا مل کر پلاسٹک بوتلوں کی ری سائیکلنگ کے لئے ایک مربوط کمپنی بنانے جارہی ہیں، فاضل جج نے اس کمپنی کی رجسٹریشن کے حوالے سے پیش رفت رپورٹ طلب کرتے ہوئے مزید سماعت 27 مارچ تک ملتوی کر دی۔

ری سائیکلنگ

مزید : صفحہ آخر /رائے