غیر قانونی اثاثہ، ایس ایچ او کو ایک سال قید اور 10ملین کا جرمانہ

غیر قانونی اثاثہ، ایس ایچ او کو ایک سال قید اور 10ملین کا جرمانہ

  



پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورکی احتساب عدالت کے جج حافظ نسیم اکبر نے غیرقانونی اثاثے بنانے کے الزام میں ملوث تھانہ سٹی بنوں کے ایس ایچ او گل حمید کو الزام ثابت ہونے پر ایک سال قید اور 10ملین روپے جرمانہ کی سزا سنادی ہے نیب پراسیکیوٹر سرتاج خان کے مطابق ملزم گل حمید ساکن لنگر خیل لکی مروت حال بنو ں 1980میں بطور سپاہی بھرتی ہوئے اور 2012میں انسپکٹر کے عہدے پر ترقی ہوئی انہوں نے لکی مروت اور بنوں کے مختلف پولیس تھانوں پر فرائض انجام دیئے اس دوران ملزم نے اپنے اور بیوی کے نام لنگر خیل میں چالیس کنال سے زائد اراضی، ظفر کالونی میں رہائشی گھر خریدا اور تین مختلف نجی بنکو ں میں اکاؤنٹس بنائے ملزم کی تمام منقولہ اور غیر منقولہ جائیداد کی مالیت ایک کروڑ اور 93لاکھ بنتی ہے، نیب نے ملزم کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے پر 2014میں انکوائری شروع کی جو 2015میں تحقیقات میں منتقل ہوئی جس کے بعد ملزم کے خلاف ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کیا گیا، گزشتہ روز ریفرنس کی سماعت مکمل ہونے اور ملزم کے خلاف جرم ثابت ہونے پر عدالت نے ملزم کو نیب آرڈیننس کی سیکشن 9اے وی کی تحت ایک سال قید بامشقت اور دس ملین روپے جرمانہ کی سزا سنائی جبکہ ملزم سے جرمانہ نیب آرڈیننس کی سیکشن 33ای کی تحت وصول کرنے کے احکامات جاری کردیئے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر