بار کونسل کی کال پر وکلاء کا بائیکاٹ جاری

بار کونسل کی کال پر وکلاء کا بائیکاٹ جاری

  



پشاور(نیوزرپورٹر) خیبرپختونخوابارکونسل کی کال پر چیف جسٹس پشاورہائی کورٹ جسٹس وقاراحمدسیٹھ کی سپریم کورٹ آف پاکستان میں تعیناتی کے لئے نام تجویز نہ کرنے کے خلاف وکلاء نے پشاورہائی کورٹ سمیت صوبہ بھرکی عدالتوں کا جمعہ کے دن دوسرے روزبھی بائیکاٹ جاری رکھا اور کوئی بھی وکیل عدالتوں میں پیش نہ ہواجس کے باعث عدالتی امور دوسرے روزبھی ٹھپ رہے بیشترمقدمات کی سماعت بغیرکارروائی کے ملتوی کردی گئی اورسائلین حسب سابق مایوس لوٹ گئے پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس وقاراحمدسیٹھ کو سپریم کورٹ کے لئے نامزد نہ کرنے اورلاہورہائی کورٹ کے جونیئرجج کی نامزدگی پر خیبرپختونخوا بار کونسل نے شدیداحتجاج کیاہے اوراس فیصلے کے خلاف تین روزہ عدالتی بائیکاٹ کااعلان کیاہے اس حوالے سے خیبر پختونخوا بارکونسل کے وائس چیئرمین شاہد رضا ملک ایڈوکیٹ اورچیئرمین ایگزیکٹو کمیٹی شاہدریاض برکی ٗ پشاورہائی کورٹ بارایسوسی ایشن کے صدر عبداللطیف آفریدی ٗ بارکونسل کے رکن نورعالم خان ٗ سینئروکلاء امین الرحمان یوسفزئی ٗ اعجازصابی ٗ ایازخان ٗ رضاء اللہ خان خلیل ٗ جمیل قمرایڈوکیٹس نے اس بات پرشدیدتحفظات کا اظہار کیا کہ پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس وقاراحمدسیٹھ کی جگہ لاہورہائی کورٹ کے جونئیرجج کو سپریم کورٹ کاجج نامزد کیاگیا اوراس طرح چیف جسٹس وقارسیٹھ کی سینیارٹی متاثرکی گئی ہے انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ کے لئے یہ اصول ہے کہ سینئرترین جج ہی سپریم کورٹ کے لئے اہل ہوں گے جبکہ اس اصول سے روگردانی کی گئی ہے جوایک غیرقانونی اور غیرآئینی اقدام ہے انہوں نے کہاکہ پنجاب کے جونیئرجج کو فوقیت دے کرناانصافی کی گئی ہے انہوں نے کہاکہ خیبرپختونخوابارکونسل اورصوبے کے غیوروکلاء اپنے چیف جسٹس اورعدلیہ کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں اورملکی سلامتی اورآئین وقانون کی بالادستی کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر