قافلے کے شیر شاہ ہائی پاس پر استقبال، 1247زائرین لیبر کمپلیکس انڈسٹریل اسٹیٹ ملتان منتقل

    قافلے کے شیر شاہ ہائی پاس پر استقبال، 1247زائرین لیبر کمپلیکس انڈسٹریل ...

  



ملتان (نیوز رپورٹر‘ کورٹ رپورٹر) تفتان سے آنیوالا زائرین کا قافلہ گزشتہ صبح قرنطینہ ملتان پہنچ گیا۔33 بسوں پر مشتمل1247 زائرین کے اس قافلہ کو کمشنر ملتان ڈویثرن شان الحق، ڈپٹی کمشنر ملتان عامر خٹک اور سی پی او زبیر دریشک نے شیر شاہ بائی پاس پر خوش آمدید کہا بعدازاں یہ قافلہ کمشنر، ڈپٹی کمشنر اور سی پی او کی قیادت میں قرنطینہہ لیبر کمپلیکس انڈسٹریل پہنچا اور وہاں زائرین کی رجسٹریشن شروع کی گئی جبکہ زائرین کے لیے ناشتہ کی تیاری بھی مکمل تھی۔ناشتے میں پراٹھا،چنے، انڈا اور چائے شامل تھی۔ قرنطینہ میں زائرین کے کھانے پینے کے انتظامات ضلعی انتظامیہ نے مکمل کر رکھے تھے۔ڈپٹی کمشنر عامر خٹک نے خود بھی زائرین میں ناشتہ تقسیم کیا۔دوپہر کو زائرین کو کھانے میں چکن قورمہ،کنوں اور لیموں دیا گیا اور شام کے کھانے میں انھیں دال، چاول اور چائے پیش کی گئی۔زائرین کا کھانے کامینیو روزانہ تبدیل ہو گا۔اس موقع پربچوں کے فیڈر اور دودھ کی وافر مقدار دستیاب بھی موجود تھی۔ ورکرز ویلفیئر کمپلیکس میں قائم قرنطینہ میں مقیم زائرین کو لنچ میں چکن قورمہ اور بریڈ کوسیل ڈسپوز ایبل ڈبوں میں فراہم کیا گیا۔زائرین کو کنوں اور لیموں بھی فراہم کیا گیا۔ ڈپٹی کمشنر ملتان عامر خٹک کی ہدایت کی ہدایت پر تفتان سے زائرین کو ملتان لانے والی بسوں کی جراثیم کشْ پانی سے دھلائی شروع کر دی گئی ہے۔احتیاطی تدابیر کے طور پر تمام بسوں کو اعشاریہ پانچ فیصد کلیوریا پانی سے دھویا گیا۔ ایمرجنسی ریسکیو 1122 کے باوزر سے بسوں کی سیٹوں، فرش اور ریلنگ کو واش کیا گیا۔بسوں کو مکمل واش اور جراثیم سے پاک کرنے کے بعد بلوچستان روانہ کیا جائے گا۔ ڈپٹی کمشنر ملتان عامر خٹک نے گزشتہ روز لیبر کمپلیکس انڈسٹریل سٹیٹ میں تفتان سے آنے والے زائرین سے ملاقات کی۔1247زائرین میں آزادکشمیر اور گلگت بلتستان کے زائرین اور قافلے میں ایران میں زیرتعلیم طلباء اور طالبات بھی شامل ہے۔اس موقع پرڈپٹی کمشنرعامر خٹک نے زائرین سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آپ ہمارے بھائی اور بہنیں ہیں،آپ مدینتہ الاولیاء ملتان کے مہمان ہیں، انہوں نے کہا کہ ملتانی مہمان نوازی میں اپنا ثانی نہیں رکھتے،حکومت پنجاب نے زائرین کے لیے گھر جیسی آسائشوں کا انتظام کیا ہے، وزیراعلیٰ عثمان بزدارانتظامات کا جائزہ کے لیے خود قرنطینہ کا دورہ کر چکے ہیں، انہوں نے کہا کہ آپ کی بھرپور دیکھ بھال کے لیے میں نے اپنا کیمپ آفس قرنطینہ میں قائم کر لیا ہے جب کہ تمام ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرز اور اسسٹنٹ کمشنرزکو قرنطینہ میں ڈیوٹیاں سونپ دی گئی ہیں، اس کے علاوہ ضلعی انتظامیہ کے افسران قرنطینہ میں فرنٹ لائن پر موجود ہیں، ضلعی انتظامیہ کو پولیس، رینجرز اور پاک فوج کی مکمل سپورٹ حاصل ہے، عامر خٹک نے کہا کہ پاک فوج کے میڈیکل ونگ کے ڈاکٹرز نے بھی قرنطینہ میں صحت کے انتظامات کا جائزہ لیاہے،قرنطینہ میں ہسپتال، آئسولیشن سنٹر اور ایچ ڈی یو قائم ہے، طبی تقاضے پورے کرنے کے بعد جو زائرین صحت مند ہیں انہیں جلد گھروں کو روانہ کیا جائے گا، اس موقع پر زائرین نے کہا کہ آپ وہ پہلے شخص ہیں جو ہم سے خوفزدہ نہیں ہے، ملتان قرنطینہ میں داخل ہونے کے بعد ہمیں تحفظ کا احساس ہوا ہے۔تفتان میں ناقص انتظامات کے بارے میں زائرین نے شکوے بھی کیے۔انہوں نے کہا کہ ہم ذمہ دار پاکستانی ہیں، کورونا وائرس کے بچاؤکے لیے ہم تمام حکومتی ہدایات پر عمل کریں گے، زائرین نے ڈپٹی کمشنر سے گفتگو میں مزید کہا کہ آپ سے ملنے کے بعد ہمیں اطمینان حاصل ہوا ہے، بعد ازاں ڈپٹی کمشنرعامر خٹک زائرین کے بچوں سے ملے اور انہیں پیار بھی کیا۔ قرنطینہ میں کام کرنے والے ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے سینٹری ورکرز کے لئے حفاظتی اقدامات مکمل کر لیے گئے۔ڈپٹی کمشنر عامرخٹک کی ہدایت پر سینٹری ورکرز کے لیے حفاظتی کٹ اور جوگر فراہم کئے جارہے ہیں۔یہ بات ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کے ایم ڈی ناصر شہزاد ڈوگرنے قرنطینہ میں گفتگو کرتے ہوئے بتائی۔انہوں نے بتایا کہ زائرین کے لئے قائم قرنطینہ میں ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کا 100 ممبر مشتمل سٹاف کام کررہاہے جس میں 80 سینٹری ورکرز شامل ہیں۔کمپنی نے 300 حفاظتی کٹ خریدی لی ہیں۔ہر سینٹری ورکر کو دو کٹس اور ایک جوڑا جوگر دئے جارہے ہیں، ایم ڈی نے بتایا کہ کمپنی کے سینٹری ورکرز 14 دن تک قرنطینہ کے اندر رہیں گے،ویسٹ مینجمنٹ کمپنی اپنے ورکرز کی صحت کا بھرپور خیال رکھے گی، ناصر شہزاد ڈوگرنے بتایا کہ شہر میں کام کرنے والے سینٹری ورکرز میں ماسک تقسیم کئے جارہے ہیں۔ اس کے علاوہ شہریوں میں بھی ماسک تقسیم کئے گئے ہیں،ایم ڈی نے کہا کہ کورونا وائرس کے خاتمہ تک ویسٹ مینجمنٹ کمپنی قوم کے ساتھ کھڑی ہے۔علاوہ ازیں صوبائی پارلیمانی سیکرٹری برائے انفارمیشن اینڈ کلچر پنجاب و ترجمان حکومت پنجاب ندیم قریشی نے کہا ہے کہ کورونا وائرس قوم کیلئے ایک امتحان ہے جو لوگ حکومتی اقدامات پر تنقید کر رہے ہیں وہ دْنیا کے حالات دیکھیں۔حکومت کے بروقت اقدامات کے ذریعے وطن عزیز کرونا کے خلاف موثر انتظامات کرنے والے 6 ممالک میں شامل ہوگیا ہے۔ندیم قریشی نے کہا کہ عوام اس وائرس کی حساسیت کو سمجھتے ہوئے زیادہ سے زیادہ احتیاط سے کام لیں اور حکومت کا ساتھ دیں۔وزیراعظم عمران خان نے عام آدمی کے حالات کو دیکھتے ہوئے لاک ڈاؤن نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کا سب سے بڑا قرنطینہ سنٹر عارضی طور پر ملتان میں قائم کر دیا گیا ہے جہاں 12 سو سے زائد زائرین تفتان سے پہنچ چکے ہیں۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز سرکٹ ہاؤس میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔تحریک انصاف کے ضلعی صدر خالد جاوید وڑائچ بھی انکے ہمراہ تھے۔پارلیمانی سیکرٹری ندیم قریشی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جنوبی پنجاب کو ملتان ہیڈ کرتا ہے،اس لئے یہاں قرنطینہ بنایا گیا ہے۔ ویلفئیر کمپلیکس قرنطینہ سنٹر کے لئے ایک محفوظ مقام ہے جہاں ہر شخص کو الگ الگ کمرے میں رکھا گیا ہے اور تمام ویسٹ کو اندر ہی ٹھکانے لگایا جائے گاندیم قریشی نے کہا کہ پاکستان میں سامری جادوگر کی حکومت نہیں جو پل بھر میں سارے مسئلے حل ہو جائیں پاکستان ان 6 ممالک میں ہے جہاں حفاظتی انتظامات بہترین ہیں۔ملتان قرنطینہ سنٹر جغرافیا ئی لحاظ سے انتہائی موزوں ہے۔اس کے اثرات شہر میں نہیں ہونگے۔ملتان بڑے دل کے لوگ ہیں یہاں کی میزبانی کی مثالیں موجود ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملتان کے شہریوں سے اپیل ہے کہ پراپیگنڈے کا شکار نہ ہوں۔زائرین کی 32 بسیں موصول ہوچکی ہے جن سے کسی قسم کا خطرہ نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد عثمان بزدار کی قیادت میں حکومت پنجاب شہریوں کو کرونا وائرس سے بچانے کیلئے موثر اقدامات پر عمل پیرا ہے۔پورے قرنطینہ کے سیوریج کے پانی کے لیے سیپٹک ٹینک بنادیئے گئے ہیں۔قرنطینہ میں وائرس سے بچاؤکے لیے مکمل میکانزم تیار کر لیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ قرنطینہ میں مقیم زائرین کو اپنے عزیز و اقارب سے فون اور ویڈیو لنک پر بات کرنے کی سہولت حاصل ہوگی،تمام زائرین کی رجسٹریشن اور سکریننگ کردی گئی ہے۔ندیم قریشی نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ زائرین کی اپنے ملک آمد پر شور مچانے والوں کو شرم آنی چاہیے،یہ وقت کسی کو نیچا دکھانے کا نہیں عوام کو وائرس سے بچاؤ کے لیے آگاہی دینے کا ہے،کسی شہری سے اس کی ماں دھرتی پر واپس آنے کا حق نہیں چھینا جا سکتا،وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے طبی آلات کی خریداری کے لیے کروڑوں روپے مختص کردیئے ہیں جس سے ضلعی انتظامیہ نے زائرین کے لیے بہترین انتظامات کئے ہیں،پارلیمانی سیکرٹری کا کہنا تھا کہ وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے تمام اے سی اور نان اے سی بس ویگن سروس تا حکم ثانی معطل رہے گی۔جنرل بس اسٹینڈ کے سٹاف،پناہ گاہ میں مقیم افراد اور مسافروں میں ماسک تقسیم کئے جارہے ہیں اور تمام سرکاری دفاتر کے باہر انفارمیشن ڈیسک قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے کیونکہ انسانی جان سے قیمتی کوئی چیز نہیں ہے،حکومت شہریوں کی صحت اور جان کی حفاظت کے لیے تمام دستیاب وسائل استعمال کرے گی۔کرونا وائرس کے خطرات کو کم کرنے کے لیے حکومت پرعزم ہے۔

مزید : صفحہ اول