اٹلی میں کورونا وائرس کا شکار ہونے والے مردوں کی تعداد عورتوں سے کتنی زیادہ ہے؟ انتہائی حیران کن اعدادوشمار سامنے آگئے

اٹلی میں کورونا وائرس کا شکار ہونے والے مردوں کی تعداد عورتوں سے کتنی زیادہ ...
اٹلی میں کورونا وائرس کا شکار ہونے والے مردوں کی تعداد عورتوں سے کتنی زیادہ ہے؟ انتہائی حیران کن اعدادوشمار سامنے آگئے

  



روم(مانیٹرنگ ڈیسک)کورونا وائرس جس قدر تیزی سے پھیلنے کی صلاحیت رکھتا ہے، اس نے بھی سائنسدانوں کو ورطہ حیرت میں ڈال رکھا ہے اور اس کے ساتھ یہ وائرس جس طرح مردوخواتین میں تمیز روا رکھ رہا ہے اس پر بھی ماہرین سر تھامے بیٹھے ہیں۔ چین کے بعد اب اٹلی سے آنے والے اعدادوشمار نے بھی ماہرین کی پریشانی دوچند کر دی ہے جن میں معلوم ہوا ہے کہ اٹلی میں وائرس کے باعث موت کے منہ میں جانے والے 70فیصد مرد اور صرف 30فیصد خواتین ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ”تاحال یہ ایک پراسرار بات ہے کہ کورونا وائرس سے مردوں کی موت کیوں زیادہ ہوتی ہے۔ اس سے بھی پہلے یہ بات انتہائی پراسرار ہے کہ یہ وائرس لاحق ہی زیادہ مردوں کو ہوتا ہے۔ خواتین کو اس وائرس کے لاحق ہونے کا امکان مردوں کی نسبت بہت کم ہے۔“

رپورٹ کے مطابق قبل ازیں چین سے سامنے آنے والے اعدادوشمار میں بھی کورونا وائرس سے مردوخواتین کی اموات میں لگ بھگ اتنا ہی فرق تھا جتنا کہ اٹلی میں دیکھا جا رہا ہے۔ اٹلی کی طرف سے گزشتہ روز جاری کیے گئے اعدادوشمار کے مطابق ملک میں کورونا کے باعث 3400اموات ہو چکی ہیں جن میں ایک ہزار سے بھی کم خواتین تھیں۔ملک میں اب تک کورونا وائرس کے جتنے مصدقہ کیس سامنے آئے ہیں ان میں 60فیصد مرد ہیں، جس کا مطلب ہے کہ یہ وائرس لاحق بھی مردوں کو زیادہ ہوتا ہے۔ اس سے قبل بین الاقوامی سطح پر اس حوالے سے ایک تجزیہ کیا گیا تھا جس میں یہ شرح اور بھی زیادہ تھی۔اس تجزئیے کے نتائج میں معلوم ہوا تھا کہ کورونا وائرس 80فیصد مردوں اور صرف20فیصد خواتین کو لاحق ہوتا ہے۔

کورونا وائرس سے اموات کے حوالے سے اگر عمر کا فرق دیکھیں تو 70سال سے زائد عمر کے لوگوں میں اس سے موت ہونے کی شرح سب سے زیادہ ہے، جو کہ 7فیصد سے 14فیصد تک ہے۔ اس کے ساتھ جو لوگ دل کے مریض ہیں ان میں بھی کورونا سے شرح اموات سب سے زیادہ 10فیصد سے زائد ہے۔ پھرذیابیطس، نظام تنفس کی بیماریوں، ہائپرٹینشن اور کینسرجیسے امراض میں مبتلا افراد کی موت ہونے کی شرح بھی 5سے 7فیصد تک ہے۔

مزید : بین الاقوامی