حافظ ناصر گروپ سبین محمود کا قاتل، صفورا چورنگی سمیت کئی وارداتوں کا اعتراف کر لیا: قائم علی شاہ

حافظ ناصر گروپ سبین محمود کا قاتل، صفورا چورنگی سمیت کئی وارداتوں کا اعتراف ...
حافظ ناصر گروپ سبین محمود کا قاتل، صفورا چورنگی سمیت کئی وارداتوں کا اعتراف کر لیا: قائم علی شاہ

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ کے وزیراعلیٰ قائم علی شاہ سبین محمود اور سانحہ صفورا کے ملزمان کے نام منظرعام پر لے آئے ہیں اوربتایا ہے کہ ان واقعات میں حافظ ناصر گروپ ملوث ہے جس کے 15 سے 20 رکن ہے اور گرفتار ملزمان نے دوران تفتیش کئی وارداتوں کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔ انہوں نے اہم ملزمان کو گرفتار کرنے والے افسران کو ترقی دینے اور سندھ پولیس کیلئے 5 کروڑ روپے انعام کا اعلان بھی کیا۔ تفصیلات کے مطابق سندھ کے وزیراعلیٰ قائم علی شاہ نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سبین محمود کے قتل میں حافظ ناصر گروپ ہی ملوث ہے جس کا ماسٹر مائنڈ سعد عزیز ہے اور سبین محمود کو قتل کرنے والا شخص سرسید یونیورسٹی کا الیکٹرانک انجینئر ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملزمان نے ڈیبرالوبو، بوہری برادری، پولیس، ناظم آباد اور نارتھ ناظم آباد میں سکولوں پر گرینیڈ حملوں اور رینجرز کے بریگیڈئیر پر حملے کا اعتراف بھی کیا ہے۔

قائم علی شاہ نے بتایا کہ اس گروپ کا سرغنہ الیاس ناصر جامعہ کراچی سے ایم اے اسلامیات ہے اور 2013ءسے دہشت گردی اور جہادی سرگرمیوں میں ملوث تھا ۔ اس گروپ میں 15 سے 20 افراد شامل ہیں تاہم ابھی ان کے نام سامنے نہیں لائیں گے۔ سندھ کے وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ چار ملزموں کو گرفتار کرنے کا بتا دیا ہے لیکن ممکن ہے اور بھی حراست میں ہوں تاہم ابھی تمام تر تفصیلات نہیں بتا سکتے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی واقعے میں را کے ملوث ہونے کے بارے میں نہیں کہا تھا لیکن بلوچستان سے لے کر کراچی تک را کی مدخلت رہی ہے اور اسی کی بنیاد پر کہا تھا کہ را ملوث ہو سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملزمان کو گرفتار کرنے پر وزیراعظم نواز شریف اور سابق صدر آصف علی زرداری نے بھی مبارکباد دی ہے ، گرفتار ملزمان کی جے آئی ٹی کرائی جائے گی جس پر پتہ چلے گا ملزمان کا تعلق کس گروپ سے ہے۔انہوں نے کہا کہ سانحہ صفورا کے ملزم گرفتار کئے جن سے اہم ثبوت ملے ہیں جبکہ انہی ملزموں میں سے ایک ملزم سعد عزیز نے سبین محمود کے قتل کا بھی اعتراف کیا ہے۔

قائم علی شاہ کا کہنا تھا کہ ملزمان کو علم نہیں تھا کہ انہیں گرفتار کرلیا جائے گا لیکن سندھ پولیس نے 3 دن میں ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے جس پر وہ شاباش کے مستحق ہیں۔ انہوں نے اس موقع پر بہترین کارکردگی دکھانے پر سندھ پولیس کیلئے 5 کروڑ روپے انعام کا اعلان بھی کیا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ گرفتار ملزمان سے کلاشنکوف، 5دستی بم، 7 نائن ایم ایم پستول، لیپ ٹاپ، دھماکہ خیز مواد اور دیگر اسلحہ برآمد ہوا ہے۔

مزید : کراچی /اہم خبریں