یہ لڑکی اپنی گریجوایشن تقریب میں گدا کیوں اٹھاکر پھر رہی ہے؟دلچسپ سکینڈل کی حیران کن تفصیلات

یہ لڑکی اپنی گریجوایشن تقریب میں گدا کیوں اٹھاکر پھر رہی ہے؟دلچسپ سکینڈل کی ...
یہ لڑکی اپنی گریجوایشن تقریب میں گدا کیوں اٹھاکر پھر رہی ہے؟دلچسپ سکینڈل کی حیران کن تفصیلات

  

کولمبیا(مانیٹرنگ ڈیسک)مبینہ زیادتی کا شکار بننے والی امریکہ طالبہ نے احتجاج کا انوکھا طریقہ اپنا لیا ہے۔ کولمبیا یونیورسٹی کی جرمن طالبہ ایما سلکوز نے اپنے ایک ساتھی طالب علم پاﺅل ننگیسر پرایک سال قبل زیادتی کا الزام لگایا اور تب سے یونیورسٹی کیمپس میں بطور احتجاج اپنا گدا(میٹرس) اپنے ساتھ اٹھائے پھرتی ہے۔گزشتہ روز جب یونیورسٹی میں سرٹیفکیٹس تقسیم کرنے کی تقریب ہوئی تو ایما اس تقریب میں بھی اپنا گدا ساتھ لے آئی۔

مزید پڑھیں :قطر میں فٹ بال ورلڈ کپ ،ایسے شاہکار کی تعمیر کا مںصوبہ کہ کسی کو یقین نہ آئے

اپنا ڈپلوما لیتے وقت ایما نے یونیورسٹی کے صدر لی بولینگر سے مصافحہ کرنے سے بھی انکار کر دیا۔ ایما کا کہنا ہے کہ جب تک یونیورسٹی انتظامیہ پاﺅل کو ادارے سے نکال نہیں دیتی وہ اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔ اس نے کہا کہ پاﺅل کئی لڑکیوں سے زیادتی کر چکا ہے، اس نے ایک تقریب میں مجھے اور دیگر 2لڑکیوں کو ایک ساتھ زیادتی کا نشانہ بنایا۔ایما اور اس کی 22ساتھیوں نے گزشتہ سال پاﺅل کے خلاف یونیورسٹی انتظامیہ کو شکایت کی تھی لیکن انتظامیہ کی طرف سے کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ ایما نے بتایا کہ پاﺅل نے مجھے اور میری دو ساتھی لڑکیوں کو ہماری گریجوایشن کے دوسرے سال میں زیادتی کا نشانہ بنایا، اس نے یہ سب یونیورسٹی کے اندر ایک چھوٹی سی تقریب کے دوران کیا۔

بھارتی مسلمان نے بڑے دل کا ثبوت دیدیا، ہندوؤں کی بڑی خواہش پوری کردی ، تفصیلات کیلئے یہاں کلک کریں۔

دوسری طرف ایما سے زیادتی کے مبینہ ملزم پاﺅل نے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف عدالت سے رجوع کر لیا ہے، اس نے موقف اختیار کیا ہے کہ ایما بلا وجہ اسے ہراساں کر رہی ہے لیکن یونیورسٹی انتظامیہ نے اسے تحفظ دینے کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا۔ پاﺅل نے کہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نے معاملے کی انکوائری کروائی تھی جس میں اسے بے گناہ قرار دیا گیا تھا لیکن اس کے باوجود انتظامیہ نے اسے بدنامی سے بچانے کے لیے ایما کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس