پاکستان کی 25فیصد سے زائد توانائی جی ای کے بنائے جنریٹرز سے پیدا ہوتی ہے

پاکستان کی 25فیصد سے زائد توانائی جی ای کے بنائے جنریٹرز سے پیدا ہوتی ہے

لاہور(کامرس رپورٹر)جنرل الیکٹرک (جی ای) کے وائس چیئر مین جان رائس نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، امریکی سفیر رچرڈ والسن، وزیرِ ریلوے خواجہ سعد رفیق ، چیئرمین بورڈ آف انویسٹمنٹ مفطاح اسمعیل اور وفاقی وزیرپیٹرولیم وقدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی سمیت اہم رہنماؤں سے ملاقاتوں میں پاکستان کی ترقی میں بھرپور کردار ادا کرنے کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔ان اہم ملاقاتوں میں جان رائس نے پبلک پرائیوٹ اشتراک سے توانائی، خاص طور پر گیس اور دیگر شعبوں میں ترقیاتی کاموں پر گفتگو کی۔انہوں نے کہا کہ جی ای پچھلے پچاس سال سے زائد عرصے سے پاکستان کے ترقیاتی کاموں میں شامل ہے جس پر ہمیں فخر ہے۔ آج پاکستان کی پچیس فیصد سے زائد توانائی جی ای کے بنائے ہوئے جنریٹرز سے پیدا کی جاتی ہے، پاکستان کے ساٹھ فیصد سے زائد کمرشل کیرئیر ز کی ضروریات جی ای اور اس کے پارٹنر انجن پوری کرتے ہیں اور پاکستان کے ستر فیصدسے زائد اہم ہسپتالوں میں جی ای کے آلات موجود ہیں ۔جان رائس نے امریکہ کے سفیر رچرڈ اولسن کی تقریب میں بھی شرکت کی جو کہ پی آئی اے کے جی ای 90انجنز کی سروس کی نئی مالی معاونت کی سہولت کے سلسلے میں منعقد کی گئی تھی۔ اس موقعے پر وزیرِ خزانہ اسحاق ڈار،پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائن کے چیئر مین نصیر جعفر ، وزیر اعظم کے مشیر برائے ایوی ایشن شجاعت عظیم اور دوسرے اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔

یہ معاہدہ پی آئی اے کے جہازوں کی کار کردگی بہتر بنانے میں ایک اہم قدم ثابت ہوگا جس کے تحت پی آئی اے مسافروں کو دنیا بھر میں باحفاظت سفر کی سہولت میسر کریگی۔

مزید : کامرس