محمود عباس اسرائیل سے مذاکرات کے لیے رائے عامہ ہموارکررہے ہیں ٗ حماس

محمود عباس اسرائیل سے مذاکرات کے لیے رائے عامہ ہموارکررہے ہیں ٗ حماس

غزہ (این این آئی)حماس نے الزام عائد کیا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے سربراہ محمود عباس جماعت پرالزام تراشی کے ذریعے اسرائیل سے مذاکرات کی بحالی کیلئے رائے عامہ ہموار کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔حماس کے ترجمان فوزی برھوم نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ محمود عباس کی جانب سے یہ دعویٰ کہ ان کے پاس حماس اور اسرائیل کے باہمی خفیہ روابط کے ثبوت موجود ہیں محض جھوٹ کا پلندہ ہے۔ محمود عباس اس طرح کے الزامات کے ذریعے نہ صرف حماس کو بدنام کرنے کی کوشش کررہے ہیں بلکہ وہ اسرائیل کے ساتھ مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کا راستہ ڈھونڈ رہے ہیں ۔

وہ دراصل یہ ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ اگرحماس اسرائیل کے ساتھ خفیہ رابطے رکھے ہوئے ہے تو انہیں بھی صہیونی ریاست کے ساتھ مذاکرات دوبارہ شروع کرنے چاہئیں۔حماس کے ترجمان نے محمود عباس کی جانب سے جماعت کے صہیونی دشمن کے ساتھ خفیہ روابط سے متعلق الزام کو قطعی بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ صدر عباس حماس کو بدنام کرنے کے لیے جعلی دستاویزات پیش کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ترجمان نے کہاکہ ہم یہ بات پورے یقین کے ساتھ کہہ سکتے ہیں کہ فلسطینی اتھارٹی اور صدر محمود عباس اسرائیل کے ساتھ مذاکرات کی بحالی کیلئے بے تاب ہوئے جا رہے ہیں۔ ماضی میں بھی انہوں نے اسرائیل کے ساتھ مذاکرات میں قومی اصولوں اور قوم کے دیرینہ حقوق پرسودے بازی کی ہے تاہم غیور فلسطینی قوم اپنے حقوق پر ڈاکے ڈالنے والوں کا قانونی محاسبہ کرے گی۔

مزید : عالمی منظر