پاکستان اور افغانستان میں انٹیلی جنس کا تبادلہ

پاکستان اور افغانستان میں انٹیلی جنس کا تبادلہ

آئی ایس آئی اور افغان انٹیلی جنس سروسز کے درمیان تعاون کے ایک معاہدے پر دستخط ہوئے ہیں اس کے تحت یہ ادارے معلومات کے تبادلے میں ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کریں گے۔دہشتگردی اور دہشتگردوں کے خاتمے کے لئے دونوں مشترکہ معلومات سے فائدہ اٹھائیں گے۔افغانستان میں نئے انتخابات اور اشرف غنی کے صدر بن جانے کے بعد سے افغانستان اور پاکستان کے تعلقات میں بہت بہتری آئی ہے۔ افغانستان اور پاکستان دونوں ہی دہشتگردی کا شکار ہیں اور دونوں ممالک کے سرحدی علاقوں میں ان دہشت گردوں کے ٹھکانے ہیں، حال ہی میں وزیر اعظم محمد نواز شریف اور آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کابل کا دورہ کیا اور بہت سے امور طے پائے تھے۔ ان میں سے ایک یہ بھی تھا کہ دونوں ملک معلومات کا بھی تبادلہ کریں گے کہ امن کا خواب شرمندہ تعبیر ہو سکے۔ توقع ہے کہ اس معاہدے کے بعد ٹھوس معلومات کا تبادلہ ہو گا جس کی بناپر دہشتگردوں تک پہنچنا ممکن ہو جائے گا اور اس طرح ان دونوں اداروں کے درمیان تعاون سے حالات بہتری کی طرف جائیں گے۔ توقع کرنا چاہئے کہ فریقین دیانت داری سے معلومات کا تبادلہ کریں گے کہ دونوں کے تعاون سے دہشتگردی کا خاتمہ اور عوام کے لئے امن قائم ہو سکے گا۔

مزید : اداریہ