رواں برس غیر ملکی ایجنسیوں کی معاونت کرنیوالے 30ہزار مشتبہ افراد گرفتار ہوئے

رواں برس غیر ملکی ایجنسیوں کی معاونت کرنیوالے 30ہزار مشتبہ افراد گرفتار ہوئے

 لا ہور (ر پو رٹ : شعیب بھٹی ) رواں برس قانون نافذ کرنے والے اداروں نے قومی ایکشن پلان کے تحت دشمن خفیہ ایجنسیوں کی معاونت کرنے والے ملک بھر میں 140افراد سمیت 30ہزار مشتبہ افراد گرفتار کئے ہیں ۔حکومت پاکستان انٹیلی جنس آپریٹنگ سسٹم کی بہتری اور دشمن خفیہ ایجنسیوں کی پاکستان میں کارروائیوں کے شواہد اکٹھے کر کے معاملہ عالمی سطح پر اٹھانے کیلئے غور کر رہی ہے۔ گرفتار کیے جانیوالے مشتبہ افراد میں سب سے زیادہ 16813 خیبر پختونخواہ ،5720 سندھ، 2650 پنجاب، 747 بلوچستان،179فاٹا،28،گلگت بلتستان اور9افراد آزاد کشمیر سے گرفتار کیے گئے۔تفصیلات کے مطابق حکومت پاکستان کیطرف سے دہشت گردی کے خاتمے کے لیے بنائے گئے نیشنل ایکشن پلان کے تحت ملک بھر میں جس میں چاروں صوبوں، گلگت بلتستان اور فاٹا شامل ہے میں رواں سال قانون نا فذ کر نے وا لے اداروں اور پولیس نے ملک بھر سے 30 ہزار کے لگ بھگ مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ مذکورہ گرفتاریاں سانحہ پشاور کے بعد بنائے جانیوالے قومی ایکشن پلان کے تحت کی گئی ہیں اور گرفتار ہونے والے افراد میں 140 ایسے بھی ہیں جو دشمن خفیہ ایجنسیوں کی معاونت کر رہے تھے اور ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث تھے۔ معتبر ذرا ئع کا کہنا ہے کہ کہ دشمن ایجنسیوں کے جاسوسوں کو پنجا ب ، کراچی، بلوچستان اور قبائلی علاقے سے حراست میں لیا گیا ہے۔ مجموعی طور پر30ہزار کے کے لگ بھگ مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا ہے جن میں 16813 افراد کو خیبرپختونخوا، 5720 کو سندھ، 2650 افراد کو پنجاب، 3466 کو بلوچستان، 747 کو اسلام اباد، 9 کو ازاد کشمیر، 28 کو گلگت بلتستان اور 179 افراد کو قبائلی علاقے سے گرفتار کیا گیا ہے جبکہ یہ گرفتاریاں وزارت دا خلہ کی جانب سے مرتب کی گئی 742 رپورٹس کی بنیاد پر کی گئیں اورمزید بتایا گیا کہ ملک بھر میں مشتبہ افراد کیخلاف قانون نافذ کرنیوالے اداروں کا آپریشن جار ی ہے اورحکومت دشمن عناصر کا ملک سے صفا یا کرنے کیلئے کام کر رہی ہے جس کیلئے خفیہ ایجنسیاں،رینجرز اور پولیس مختلف مقامات پر کارروائی کر رہے ہیں ۔ با وثوق ذرا ئع نے مزید بتایا کہ دشمن خفیہ ایجنسیوں کی کارروائیوں کو روکنے کے لیے انٹیلی جنس آپریٹنگ سسٹم کو بہتر بنانے اور معاملے کو عالمی سطح پر اٹھانے پر غور کیا جا رہا ہے ۔

مزید : علاقائی