یقین کرنا مشکل ہے کہ پاکستان ایگزیکٹ سکینڈل سے بے خبر تھا، نیویارک ٹائمز

یقین کرنا مشکل ہے کہ پاکستان ایگزیکٹ سکینڈل سے بے خبر تھا، نیویارک ٹائمز

نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک) مشہور امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے کہا ہے کہ اس بات پر یقین کرنا مشکل ہے کہ حکومت پاکستان کو ایگزیکٹ کے جعلی ڈگریوں کے دھندے کے بارے میں علم نہیں تھا۔تفصیلات کے مطابق ایگزیکٹ کا جعلی ڈگریوں کا دھندا بے نقاب کرنے کے نیویارک ٹائمز نے اپنے تازہ ترین ادارئیے میں کہا ہے کہ ایگزیکٹ کا یہ دھندا کئی سال سے جاری تھا جس سے اس نے کروڑوں روپے کمائے اور یہ کمپنی جعلی ڈگریوں کی فروخت کا عالمی نیٹ ورک اور جعلی آن لائن سکولز کا عالمی نیٹ ورک بھی چلاتی رہی ہے جبکہ اس کمپنی نے بے مقصد کورسز کی ڈگریاں مہنگے داموں فروخت کیں۔ اخبار کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان میں جعلی ڈگریوں کا دھندا ایک کمپنی تک محدود نہیں ہے۔اخبار کے مطابق جعلی ڈگریوں کا کاروبار عالمی سطح پر اربوں ڈالر کی صنعت بن چکا ہے اور سالانہ 50 ہزار سے زائد پی ایچ ڈی کی ڈگریاں بھی جاری کی جا رہی ہیں۔ میڈیکل کی جعلی ڈگریوں کا اجراء خصوصاً خطرناک قرار دیا گیا ہے۔ اخبار کے مطابق یہ یقین کرنا مشکل ہے کہ حکومت پاکستان کو ایگزیکٹ کے کاروبار کا علم نہیں تھا اور جعلی ڈگریوں کی پورٹ شائع ہونے کے بعد پاکستان کارروائی کرنے پر مجبور ہوا۔ اخبار نے اپنے ادارئیے میں مزید کہا ہے کہ ایگزیکٹ کا معاملہ بے نقاب ہونے کے بعد 3300 غیر تصدیق شدہ یونیورسٹیوں کی تحقیقات اور جعلی کمپنیوں کے خلاف سخت اقدامات کی ضرورت ہے اور اس مقصد کیلئے کانگریس اور قانون بنانے والوں کو اقدامات کرنے ہوں گے ۔

مزید : صفحہ اول