بھٹہ مالک کے ظلم کا شکار خاندان انصاف کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

بھٹہ مالک کے ظلم کا شکار خاندان انصاف کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور
بھٹہ مالک کے ظلم کا شکار خاندان انصاف کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

  

 لاہور(کرائم سیل)باٹا پور کے علاقہ میں بھٹہ مالک کے ظلم کا شکار خاندان انصاف کے لیے در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہو گیا،پولیس اہلکار وں نے ملزمان سے ملی بھگت کر لی ہے ،متاثرہ افراد کا الزام۔بھٹہ خشت محمد اسلم اور اس کی بیوی رخسانہ نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ وہ باٹا پور کے ایک نواحی گاؤں میں ایک بھٹہ پر کام کرتے تھے جبکہ وہ اصل میں ساہیوال کے رہائشی ہیں اور 3سال قبل یہاں کام کرنے آئے تھے۔انہوں نے بتایا کہ ایک ماہ قبل انہوں نے بھٹہ مالک سے کچھ پیسے مانگے تاکہ وہ ساہیوال جا سکیں لیکن اس نے ان کو پیسے دینے سے انکار کر دیا ، اور تیش میں آ کر اس نے انہیں ان کی رہائش گاہ جو کہ اس نے ہی انہیں فراہم کی تھی سے ان کا سامان باہر پھینک دیا ۔انہوں نے بتایا کہ بھٹہ مالک نے ان کے 12ہزار روپے دینے ہیں جو کہ وہ نہیں دے رہا اس حوالے سے ہم تھانے باٹا پور میں درخواست بھی لیکر کئی مرتبہ گئے ہیں لیکن پولیس کی جانب سے تاحال کوئی کارروائی نہیں کی گئی پولیس حکام واقع کا نوٹس لیں۔اس حوالے سے تھانہ باٹا پور میں رابطہ کیا گیا توانہوں نے بتایا کہ ایسی کوئی درخواست انہیں وصول نہیں ہوئی ہے۔

مزید : علاقائی