15لاکھ تاوان کیلئے اغواء کیاجانے والا مغوی 84روز بعد گھر پہنچ گیا

15لاکھ تاوان کیلئے اغواء کیاجانے والا مغوی 84روز بعد گھر پہنچ گیا

لاہور(نامہ نگار)مبینہ طورپر15لاکھ روپے تاوان خاطر اغواء ہونے والا شہری شہزادعلی ،اغواء کاروں کے چنگل سے فرارہوکر84روز بعدگھرپہنچ گیا جسے عدالت میں پیش کیاگیاتوایڈیشنل سیشن جج حامدحسین نے بادامی باغ پولیس سے کل22مئی کورپورٹ طلب کرلی ہے ۔بادامی باغ سے 84روز قبل 15لاکھ تاوان کی خاطر اغوا ہونے والے شہزاد علی کے اچانک گھر پہنچنے پراس کے وکیل مہرمحمد شکیل نے فاضل عدالت میں پیش کیا۔عدالت کو بتایا گیا کہ شہزاد علی کو مبینہ طور پرحاجی شفیق، ظہیرعالم اور دیگر افراد بادامی باغ سے اغوا ء کرکے گوجرانوالہ لے گئے جہاں سے اس کے والدین سے 15لاکھ روپے تاوان دینے کا مطالبہ کیا گیاتھاجبکہ اغواکاروں نے مغوی کوتشددکانشانہ بھی بنایاگیا،ملزمان کے خلاف تھانہ بادامی باغ میں رپورٹ درج کرائی گئی لیکن پولیس نے بھی کوئی کارروائی نہیں کی،ملزمان کو علم ہوا کہ شہزادعلی کے بارے میں پولیس اور اس کے اہل خانہ کو علم ہو گیا ہے جس پر انہوں نے اسے قتل کرنے کا پروگرام بنایااوراسے سیالکوٹ لے گئے جہاں شہزادکو بھاگنے کا موقع مل گیا۔

اور وہ لاہور پہنچ گیاہے جس کے بعد پولیس سے رابطہ کیا گیا لیکن اس حوالے سے کوئی تعاون نہیں کیاگیا،درخواست میں عدالت سے استدعاکی گئی کہ پولیس کوملزمان گرفتارکرنے کاحکم جاری کیاجائے، عدالت نے بیان اوروکیل کے دلائل کے بعدبادامی باغ پولیس سے معاملے کی پورٹ طلب کرلی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4