مضر صحت گوشت بارے پنجاب حکومت کے فیصلے کی حمایت کرتے ہیں،وٹو

مضر صحت گوشت بارے پنجاب حکومت کے فیصلے کی حمایت کرتے ہیں،وٹو

لاہور( نمائندہ خصوصی) پیپلز پارٹی سنٹرل پنجاب کے صدر، میاں منظور وٹو نے پنجاب حکومت کے حالیہ اُس فیصلے کی حمایت کی ہے جس میں حکومت نے حرام اور مضر صحت گوشت فروخت کرنے کو ناقابل ضمانت جرم قرار دینے کے علاوہ اِن گھناؤنے جرم میں ملوث مجرموں کو 8 سال تک سزا دینے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے جاری ایک بیان میں اس قانون کے نفاذ کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے خدشے کا بھی اظہار کیا کیونکہ پنجاب حکومت کا ریکارڈ اس ضمن میں مایوس کن ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کے لیے یہ بڑی شرمندگی کا باعث تھا کہ ایک تسلسل سے اخباروں میں حرام، مضر صحت اور مردہ جانوروں کے گوشت کی فروخت کے متعلق خبریں آرہی تھیں لیکن حکومت نے اسکو روکنے کے لیے کوئی موثر اقدامات نہ کئے اور یہ کاروبار جاری رہا۔ انہوں نے کہا کہ اس جرم کو ناقابل ضمانت جرم قرار دینے کے علاوہ 8 سال کی سزا بھی اُن مجرموں کو اِس کاروبار سے روکنے میں کامیاب نہیں ہوگی اگر اسکے نفاذ میں حکومت نے سست روی کا مظاہر کیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر قانون کے پیچھے ’’ پولیٹیکل وِل اور کمٹمنٹ‘‘ نہ ہو تو پھر ایسے قانون کو نافذ کرنے سے شہریوں کو فوائد کی بجائے دوررس نقصانات اٹھانا پڑتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ لوگ صرف اُس قانون کا احترام کرتے ہیں اور بخوشی اسکی پابندی بھی کرتے ہیں جس کا اطلاق بلاتفریق ہو اور ایسا نظر بھی آئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ قوانین کے امتیازی نفاذ سے اشرافیا کلچر پروان چڑھتا ہے اور عام آدمی کے لیے بے پناہ مصائب پیدا کرتا ہے۔

مزید : صفحہ آخر