ایک خاتون نے 3سال میں 18جعلی ڈگریاں خریدیں: ایگزیکٹ کے سابق ملازم کا انکشاف

ایک خاتون نے 3سال میں 18جعلی ڈگریاں خریدیں: ایگزیکٹ کے سابق ملازم کا انکشاف
ایک خاتون نے 3سال میں 18جعلی ڈگریاں خریدیں: ایگزیکٹ کے سابق ملازم کا انکشاف

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) جعلی ڈگریوں کے سکینڈل کی زد میں آنے والی آئی ٹی کمپنی ایگزیکٹ کے ایک سابق ملازم نے کمپنی پر لگائے جانے والے الزامات کی تصدیق کر دی۔ یاسر جمشید 4 سال تک کمپنی کے ساتھ کام کرتارہا، اس نے بتایا کہ کمپنی میں ملازمت کے دوران میرا کام سیلز ایجنٹ اور کسٹمر کے درمیان ہونے والی ٹیلی فون کالز سننا تھا۔نجی ٹی وی چینل دنیا نیوز کی رپورٹ کے مطابق یاسر نے انکشاف کیا کہ ایک خاتون نے ایگزیکٹ سے 3سال میں 18ڈگریاں خریدی تھیں۔ جب میں نے کمپنی کے فراڈ دیکھے تو اسے چھوڑنے کا فیصلہ کیا، جب کمپنی چھوڑنے کے بعد اس کے کارنامے بے نقاب کیے تو مجھے سنگین نتائج کی دھمکیاں دی گئیں جس پر مجھے پاکستان چھوڑ کر متحدہ عرب امارات میں رہنا پڑا اور اب تک عرب امارات میں ہی مقیم ہوں۔دوسری طرف بتایا گیا ہے کہ ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ نے ایگزیکٹ کمپنی کے تحویل میں لیے گئے کمپیوٹرز سے اسکین ڈگریاں حاصل کر لی ہیں،حاصل کردہ ڈگریوں کے اصلی یا جعلی ہونے کے متعلق تصدیق کی جا رہی ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں