ایرانی جہاز ہزاروں ٹن امداد لے کر یمنی بندرگاہ عدن پہنچ گیا

ایرانی جہاز ہزاروں ٹن امداد لے کر یمنی بندرگاہ عدن پہنچ گیا
ایرانی جہاز ہزاروں ٹن امداد لے کر یمنی بندرگاہ عدن پہنچ گیا

  

تہران (ویب ڈیسک) ایران کا ایک بحری جہاز امدادی سامان لے کر یمن کی بندرگاہ عدن پہنچ گیا ہے اور وہ اپنی منزل الحدیدہ بندرگاہ کی جانب رواں دواں ہے، اتحادی طیاروں کی یمن کے طول و عرض میں حوثیوں کے متعدد اسلحہ گوداموں پر بمباری کی ہے، اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ یمنی لڑائی میں کم سے کم 1850 افراد ہلاک اور 5 لاکھ سے زیادہ بے گھر ہوئے ہیں۔

 تفصیلات کے مطابق ایرانی بحری جہاز نجات کے کیپٹن مسعود قاضی میر سعید نے ارنا کو بتایا کہ ان کا جہاز 12 سو ٹن چاول، 700 ٹن آٹا، 400 ٹن ڈبہ بند غذائیں، 50 ٹن دوائیں اور میڈیکل سامان، 50 ٹن منرل واٹر، 2 ہزار کمبل، ایک ہزار خیمے اور کچن کا سامان لے کر عدن بندرگاہ پہنچ گیا ہے اور اب جنوبی یمن کے ساحل سے ہوتا ہوا اپنی منزل الحدیدہ بندرگاہ کی طرف رواں دواں ہے۔ ٹیکنیکل وجوہات اور آبنائے باب المندب کے نزدیک پانی کا درجہ حرارت بڑھنے سے جہاز کی رفتار سست ہوگئی ہے اور لئے منزل تک پہنچنے میں کچھ تاخیر ہوئی ہے۔ امید ہے آئندہ 24 گھنٹے میں جہاز حدید بندرگاہ پہنچ جائے گا۔

بحری جہاز پر 60 مسافر بھی ہیں جن میں طبی عملے، ہلال احمد کے کارکن، صحافی اور امن پسند عالمی شخصیتیں بھی شامل ہیں۔ ادھر اتحادی لڑاکا طیاروں نے بدھ کی یمن کے طول و عرض میں حوثیوں کے متعدد اسلحہ گوداموں کو بمباری کا نشانہ بنایا۔ یہ حملے صنعائ، عمران اورصعدہ ہوائی اڈے کے قریب قائم کئے گئے تاہم نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ اتحادی فوج نے زنجیبار کے ساحلی اور بندرگاہی شہرابین گورنری میں بھی حوثیوں کے ٹھکانوں پر حملے کئے ہیں۔ ادھر لوادر شہر میں حوثی ملیشیا اور عوامی مزاحمتی فورسز کے درمیان لڑائی کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ اسی اثنا میں جنیوا سے جاری اقوام متحدہ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یمن میں ایک ماہ سے جاری لڑائی میں کم سے کم 1850 افراد ہلاک اور پانچ لاکھ سے زائد بے گھر ہوچکے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی