بریگیڈیئر عثمان اسامہ بارے جانتے نہ سی آئی اے سے رابطے میں تھے: عابد عثمان

بریگیڈیئر عثمان اسامہ بارے جانتے نہ سی آئی اے سے رابطے میں تھے: عابد عثمان
بریگیڈیئر عثمان اسامہ بارے جانتے نہ سی آئی اے سے رابطے میں تھے: عابد عثمان

  

لندن (آن لائن) لندن میں مقیم سابق پاکستانی جنرل کے اہلخانہ نے ان کی جانب سے اسامہ کے ٹھکانے بارے سی آئی اے کو معلومات فراہم کرنے کے حوالے سے میڈیا میں گردش کرنے والی رپورٹوں کی تردید کی ہے۔ ریٹائرڈ بریگیڈیئر عثمان کالد جو کہ اب برطانوی شہری ہیں کا اسامہ کے ٹھکانے بارے سی آئی اے کو آگاہ کرنے کے حوالے سے نام لیا جارہا ہے۔ تاہم برطانوی اخبار ڈیلی ٹیلی گراف نے اپنی رپورٹ میں ان کے اہلخانہ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ مرحوم ریٹائرڈ بریگیڈیئر بارے میڈیا میں ایسی بے بنیاد رپورٹوں کے گرد کرنے پر سخت مشتعل ہیں رپورٹ کے مطابق عثمان کے بیٹے عابد عثمان نے بتایا کہ میرے والد جو ایک سال قبل انتقال کرگئے تھے ان کے بارے میں ایسی رپورٹیں افسوسناک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد ایک معزز اور محبت وطن شہری تھے۔ انہوں نے کہا کہ جب یہ واقعہ پیش آیا اس وقت میرے والد کینسر کے مرض میں مبتلا تھے ار وہ کبھی ہسپتال اور کبھی گھر میں ہوتے۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد نے 1976ءسے امریکہ کا دورہ نہیں کیا اور وہ 1979ءسے برطانیہ میں رہ رہے تھے چنانچہ ان کا یا ان کے اہلخانہ کا امریکی شہریت حاصل کرنے کا کوئی جواز نہیں بنتا۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد کا سی آئی اے سے کوئی رابطہ نہی ں تھا اور وہ بن لادن کے حوالے سے کچھ نہیں جانتے تھے۔ ماسوائے اس کے کہ وہ اسامہ کے بارے میں جو کچھ اخباروں میں پڑھتے رہتے تھے جیسا کہ دوسرے لوگ بھی پڑھتے اور جانتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد سیاست کے حوالے سے کافی بولتے تھے یہی وجہ ہے کہ انہیں باآسانی ہدف بنایا گیا۔

مزید : بین الاقوامی