جوڈیشل کمیشن کی سفارش پر 2سال بعد عمل درآمد ،عدالتی حکم پر حافظ شاہد ندیم کاہلوں کو ہائی کورٹ کا جج مقرر کردیا گیا

جوڈیشل کمیشن کی سفارش پر 2سال بعد عمل درآمد ،عدالتی حکم پر حافظ شاہد ندیم ...
جوڈیشل کمیشن کی سفارش پر 2سال بعد عمل درآمد ،عدالتی حکم پر حافظ شاہد ندیم کاہلوں کو ہائی کورٹ کا جج مقرر کردیا گیا

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائی کورٹ کے حکم پر وفاقی حکومت نے تقریبا ً2سال بعد حافظ شاہد ندیم کاہلو ں کو لاہور ہائی کورٹ کا جج مقرر کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا۔
حافظ شاہدندیم کاہلوں آج 22مئی کو لاہور ہائی کورٹ کے ایڈیشنل جج کے عہدہ کا حلف اٹھائیں گے ۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس منظور احمد ملک ان سے حلف لیں گے ۔جوڈیشل کمیشن نے اکتوبر 2013ءمیں حافظ شاہد ندیم کاہلوں کو لاہور ہائی کورٹ کا جج مقرر کرنے کی سفارش کی تھی تاہم متعلقہ پارلیمانی کمیٹی نے جوڈیشل کمیشن کی سفارش سے اتفاق نہیں کیا تھا اور مبینہ طور پر کمیشن نے حافظ شاہد ندیم کاہلوں کو حافظ قرآن اور باریش ہونے کی بناءپر ان کا نام ڈراپ کردیا تھا جسے لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج کیا گیا اور مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے اس سلسلے میں دائر درخواست منظور کرتے ہوئے حکم جاری کیا تھا کہ جوڈیشل کمیشن کی سفارشات کی روشنی میں حافظ شاہد ندیم کاہلوں کے تقرر کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے ۔عدالت نے قرار دیا تھا کہ پارلیمانی کمیٹی جوڈیشل کمیشن کی سفارشات کو مسترد کرنے کا اختیار نہیں رکھتی ۔

مزید : لاہور