امریکی فوج اپناخلائی راکٹ X-37B چوتھی مرتبہ کل خلاء میں بھیجے گی

امریکی فوج اپناخلائی راکٹ X-37B چوتھی مرتبہ کل خلاء میں بھیجے گی
امریکی فوج اپناخلائی راکٹ X-37B چوتھی مرتبہ کل خلاء میں بھیجے گی

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی خلائی ادارے ناسا سمیت دنیا کے کئی ممالک خلائی مشن پر کام کر رہے ہیں اورتحقیقات کے لیے اپنے راکٹ خلاء میں بھیج رہے ہیں لیکن امریکی فوج نے ایک ایسا پراسرار خلائی مشن شروع کر رکھا ہے جس کے متعلق کسی کو کچھ بھی معلوم نہیں۔ امریکی فوج اپناخلائی راکٹ X-37B چوتھی مرتبہ کل خلاء میں بھیجے گی۔ امریکی فوج قبل ازیں بھی یہ راکٹ کیپ کینورل ائیرفورس سٹیشن سے 3مرتبہ خلاء میں بھیج چکی ہے۔ یہ اب تک خلاء میں جانے والے راکٹوں میں سب سے زیادہ پراسرار راکٹ ہے جس کے متعلق کسی کو یہ بھی معلوم نہیں کہ اس کے اندر کون موجود ہو گا جو خلاء میں جائے گا اور اس کے اہداف کیا ہوں گے۔اس حوالے سے مختلف افواہیں گردش کر رہی ہیں جن کے مطابق یہ راکٹ ایک بمبار خلائی طیارہ ہو سکتا ہے جس کا مقصد سیٹلائٹس کو تباہ کرنا ہو گا۔ امریکی فوج کا یہ خلائی راکٹ 2سال تک خلاء میں رہنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔یہ پر اسرار راکٹ زمین کے گرد چکر لگاتا رہتا ہے اور پھر ناسا کی پرانی شٹل کی طرح زمین پر لینڈ کرتا ہے۔رپورٹس کے مطابق اس پر کوئی شخص بھی سوار نہیں ہوتا بلکہ اسے زمین سے کنٹرول کیا جاتا ہے اور یہ دوبارہ خلاء میں جانے کی صلاحیت بھی رکھتا ہے۔اس راکٹ کی لمبائی 29فٹ ہے جو ناسا کی خلائی شٹل کا ایک چوتھائی ہے۔یہ راکٹ اپنی گزشتہ فلائٹ کے دوران 675دن تک خلاء میں رہا اورگزشتہ سال اکتوبر کے مہینے میں زمین پر اترا۔ راکٹ اپنے سابقہ تینوں آپریشنز کے اختتام پر امریکی ریاست کیلیفورنیا میں اترا۔ امریکی فوجی حکام کی طرف سے اس راکٹ کے متعلق تاحال کوئی بیان سامنے نہیں آیا۔

مزید : صفحہ آخر