خاتون قتل، 2افراد نے خودکشی کرلی، حادثات نے 6زندگیاں نگل لیں

خاتون قتل، 2افراد نے خودکشی کرلی، حادثات نے 6زندگیاں نگل لیں

  

ملتان،حاصل پور،چشتیاں،شاہ جمال،سرائے سدھو،خانیوال،ہارون آباد،لیاقت پور،دائرہ دین پناہ(کرائم رپورٹر،نمائندگان)2افراد نے خودکشی کرلی۔خاتون کو کالا پتھر (بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

پلاکر شوہر نے ابدی نیند سلادیا۔مختلف حادثات میں چچا بھتیجا سمیت6افراد جاں بحق ہوگئے۔بچہ دریا میں ڈوب کر چل بسا،ملتان سے کرائم رپورٹر،شاہ جمال سے نمائندہ پاکستان کے مطابق یتیم بچی کو اسلحہ کے زور پر اغوا کر کے شادی کرنے والے نے ساتھیوں کی مدد سے کالا پتھر پلا کر مار ڈالا ،موضع سمانہ ڈونہ کے رہائشی فدا حسین نے پولیس کو بتایا کہ اس کا بھائی محمد اقبال فوت ہو چکا ہے جس کی اولاد میں ایک بیٹی ممتاز بی بی اور بیٹا محمد بلال ہیں اور دونوں اسکی زیر کفالت ہیں ظفر حسین،محمد سلیم،ذوالفقار اور تین کس نامعلوم مسلح آتشیں اسلحہ اس کے گھر گھس آئے اور جان سے مارنے کی دھمکی دیکر ممتاز بی بی کو اغوا کر کے لے گئے بعد ازاں اسکی مرضی کے بر خلاف ذوالفقار نے شادی کر لی اور تشدد کا نشانہ بناتا رہا درج بالا ملزمان نے ممتاز بی بی کو زبر دستی کالا پتھر پلا دیا اور تشویش ناک حالت میں نشتر لے گئے جہاں وہ فوت ہو گئی پولیس تھانہ شاہجمال نے چچا فدا حسین کے بیان پر مقدمہ درج کر لیا۔حاصل پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق بستی چھوہن تھانہ صدر کی حدود میں اکرم نامی نوجوان نے مبینہ طور پر خود کو پھندے سے لٹکاکر خودکشی کر لی علاقہ مکینوں کا کہنا تھا کہ اکرم نامی شخص کی چکن کی شاپ تھی اور وہ شام کو اپنی دکان بند کر کے گھر چلا گیا تھا جبکہ اس کے گھر والوں کا کہنا ہے کہ اکرم تقریباََرات دس بجے گھر سے لا پتہ ہو ا تھا گھر والوں نے بہت تلاش کیا ،صبح دکان کھولی تو اکرم کی لاش پنکھے سے جھول رہی تھی تا حال اس بات کا پتہ نا چل سکا ہے کہ اکرم نے خود کشی کی ہے یا کسی نے قتل کیا ہے جس پر اہل علاقہ نے پولیس کو اطلاع دی پولیس نے موقع پر پہنچ کر نعش کو اپنی تحویل میں لے کرپوسٹ مارٹم کے لئے تحصیل ہیڈ کوارٹر اسپتال منتقل کر دی ہے ۔چشتیاں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق نواحی گاؤں شہر فرید میں 15سالہ لڑکی مسماۃ عائشہ بی بی نے گھریلو پریشانی کی بناء پر کالا پتھر پی کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا ۔ جبکہ چشتیاں کے ایک نواحی دیہات کی ایک 22سالہ خاتون سحر کنول نے گھریلو پریشانی کی بناء پر زہریلی دوائی پی کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا ۔ جنہیں بگڑتی ہوئی حالت دیکھ کر ہسپتال پہنچایا گیا ہے جہاں وہ زندگی او رموت کی کشمکش میں رہنے کے بعد دم توڑ گئیں ۔ سرائے سدھو سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گذشتہ صبح چوپڑ ہٹہ کے رہائشی حیدر علی اپنے چچا محمد رفیق کے ہمراہ موٹر سائیکل پر سوار ملتان جارہے تھے کہ جب وہ جھنگ روڈ تھانہ بارہ میل کے سامنے پہنچے تو عقب سے آنے والے مزدا ڈالے نے انہیں ٹکر ماردی جس سے دونوں بری طرح زخمی ہوگئے اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی جانبحق ہوگئے پولیس تھانہ بارہ میل نے قانونی کارروائی کے بعد لاشوں کو ورثاء کے حوالے کردیا لاشوں کے گھر پہنچنے پر کہرام مچ گیا یاد رہے حیدر علی زکریا یونیورسٹی ملتان کا ملازم تھا اور ڈیوٹی پر جارہا تھادوسری طرف مزدا ڈارئیور موقع سے فرار ہوگیا مزدا کو پولیس تھانہ بارہ میل نے قبضہ میں لے کر ڈرائیور کی تلاش شروع کردی ہے۔خانیوال سے نمائندہ پاکستان کے مطابق نواحی علاقہ جہا نیا ں پل 114 ملتان روڈ پر تیز رفتار آئل ٹینکر نے سائیکل سوار کو روند ڈالاموقع پر جاں بحق متوفی کی شناخت صدیق جوگی سکنہ دین پور کے نام سے ہوئی ہے آئل ٹینکر ڈرائیور موقع سے فرار پو لیس اور 1122نے موقع پر پہنچ کر کاروائی شروع کر دی ۔ہارون آباد سے نامہ نگار کے مطابق 96سکس آرکا رہائشی محمد عمران اپنے گاؤں جا رہا تھا کہ نواحی گاوں 86فائیوآر کے قریب تیز رفتاری کے باعث گاڑی جس کو محمد عمران چلا رہا تھا درخت سے ٹکرا گئی اور محمد عمران موقع پر ہی جاں بحق ہو گیا ،محمد عمران کے لواحقین نے اسے اتفاقیہ حادثہ قرار دیتے ہوئے محمد عمران کی تدفین کر دی ۔خانیوال سے بیورو رپورٹ کے مطابق میاں چنوں.پہلی جماعت کا طالب علم سکول سے چھٹی کے بعد گھر آرہا تھا کہ ریلوے ٹریک کراس کرتے ہوئے کراچی سے لاہور جانیوالی گرین لائن ایکسپر یس کی زد میں

آکر شدید زخمی ہو گیا جیسے فوری طور ریسکیو1122 نے زخمی زبیر اسلم سکنہ کچی آبادی میاں چنوں کو تحصیل ہسپتال میاں چنوں منتقل کیا لیکن وہ جانبر نہ ہوسکا اور ہسپتال میں میں ہی دم توڑ گیا۔لیاقت پور سے نامہ نگا رکے مطابق ایمرجنسی پیشنٹ ویلفےئر سوسائٹی لیاقت پور کے جوائنٹ سیکرٹری محمد شاہد ندیم کی بیٹی کی شادی کی تقریب میں شرکت کے لیے لاہور سے ان کا سسرالی خاندان لیاقت پور آیا ہوا تھا کہ لاہور واپس جاتے ہوئے ان کی کار درخت سے جا ٹکرائی تھی جس کے نتیجہ میں شاہد ندیم کے سسر حاجی محمد رفیق ،خوش دامن زینب بی بی اور برادر نسبتی محمد اسلم زخمی ہو ئے جنہیں جناح ہسپتال لاہور منتقل کیا گیا جہاں زینب بی بی دم توڑ گئی شدید زخمی حاجی محمد رفیق بھی اپنی اہلیہ کی وفات کے چار روز بعددم توڑ گئے جن کو لاہور میں سپرد خاک کر دیا گیا ۔دائرہ دین پناہ سے نامہ نگار کے مطابق نواحی موضع بیٹ نشان والاکارہائشی کاشتکارغلام فریدکا4سالہ بیٹاعظمت اللہ گھرکے باہرکھیلتے ہوئے دریائے سندھ میں ڈوب گیاجسکی تلاش تاحال جاری ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -