قائد اعظم یونیورسٹی 2طلباء تنظیموں میں مسلح تصادم ،پولیس سے جھڑپیں ،درجنوں طلباء زخمی

قائد اعظم یونیورسٹی 2طلباء تنظیموں میں مسلح تصادم ،پولیس سے جھڑپیں ،درجنوں ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وفاقی دارالحکومت کی قائد اعظم یونیورسٹی میدان جنگ بن گئی، دو طلباء گروپوں میں تصادم ، فائرنگ،شیلنگ ،لاٹھی چارج اور پولیس سے جھڑپوں کے نتیجے میں درجن سے زائد طلباء زخمی ہو گئے ،زخمیوں کو پولی کلینک اور پمز ہسپتال میں منتقل کر دیا گیا ، پولیس کی یونیورسٹی میں طلباء کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی شیلنگ ، طلباء کی طرف سے پولیس پر جوابی پتھراؤ ، متعدد طلباء کو گرفتار کر لیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق چند دن قبل قائداعظم یونیورسٹی میں سندھی کونسل اوربلوچ سٹوڈنٹ کونسل کے طلباء میں تصادم ہوا تھا ۔ ہفتہ کو طلباء نے بدلہ لینے کے لئے ایک مرتبہ پھر ایک دوسرے پرحملہ کر دیا ۔ ذرائع کے مطابق طلباء تنظیموں میں لڑائی دن ساڑھے بارہ بجے پرانے ہاسٹلز کے سامنے اس وقت شروع ہوئی جب سندھی کونسل کے طلباء نے یونیورسٹی میں قائم ہٹس میں بیٹھے بلوچی طلباء پر حملہ کیا اور انہیں تشدد کا نشانہ بنایا ۔ بعد ازاں دونوں گروہوں کی طرف سے لڑائی میں فائرنگ بھی کی گئی ۔ واقعہ کے بعد پولیس کی بھاری نفری قائد اعظم یونیورسٹی پہنچ گئی ۔ پولیس کی طرف سے یونیورسٹی طلباء کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس کی شیلنگ کی گئی ۔ جب کہ طلباء کی طرف سے پولیس پر جوابی پتھراؤ کیا گیا ۔ اطلاعات کے مطابق تصادم کے نتیجے میں یونیورسٹی کے درجن سے زائد طلباء زخمی ہوئے ہیں جنہیں طبی امداد کے لئے پمز اور پولی کلینک منتقل کر دیا گیا ہے ۔ حالات کو قابو میں کرنے کیلئے پولیس اور رینجرز کی مزید نفری طلب کر لی گئی۔ پولیس نے دونوں طرف کے متعدد طلبہ کو حراست میں لے کر تھانے منتقل کر دیا ۔ واقعے کے بعدرینجرز کی بھاری نفری بھی قائد اعظم یونیورسٹی پہنچ گئی تھی ۔ جب کہ ہاسٹلز کو بیھ سرچ آپریشن کے لیے خالی کروا لیا گیا ۔ جہاں سے اسلحہ برآمد ہونے کی بھی توقع ہے ۔ دوسری طرف یونیورسٹی کی انتظامیہ نے تصادم کے بعد یونیورسٹی اورہاسٹلز 7 روز کے لیے بند کر دیئے جس کا نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -