امریکہ و عالمی دباؤ مسترد،شمالی کوریانے ایک اور میزائل کا تجربہ کرلیا

امریکہ و عالمی دباؤ مسترد،شمالی کوریانے ایک اور میزائل کا تجربہ کرلیا
امریکہ و عالمی دباؤ مسترد،شمالی کوریانے ایک اور میزائل کا تجربہ کرلیا

  

پیانگ یانگ (آئی این پی)شمالی کوریا نے ایک مرتبہ پھر امریکی اور بین الاقومی دباؤ اور پابندیوں کو مسترد کرتے ہوئے ایک نئے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کرلیا،رواں برس کے دوران شمالی کوریا کی جانب سے کیا جانے والا یہ اپنی نوعیت کا دسواں تجربہ ہے،ادھر جنوبی کوریا کے صدر نے قومی سلامتی کی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا۔

’مجھے کالے جادو پر ایک کتاب ملی جس میں لکھا تھا اپنے بیٹے کو قربان کر دو تو یہ فائدہ ہو گا اس لئے میں نے 14 سالہ بیٹے کا گلہ کاٹ ڈالا ‘ کس فائدے کیلئے باپ نے یہ سفاک ترین کام کر ڈالا؟ جان کر آپ بھی کانپ اُٹھیں گے,خبر پڑھنے کیلئےکلک کریں

غیر ملکی میڈیا کے مطابق شمالی کوریا نے ایک مرتبہ پھر امریکی اور بین الاقومی دباؤ اور پابندیوں کو مسترد کرتے ہوئے ایک نئے بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔ جنوبی کوریا کی فوج کے چیفس آف سٹاف کے مطابق یہ تجربہ اتوار کی دوپہر دارالحکومت پیانگ یانگ کے جنوب میں کیا گیا اور اس میزائل نے مشرق کی جانب تقریبا پانچ سو کلومیٹر کا سفر کیا۔ تاہم اس بارے میں انہوں نے مزید تفصیلات سے آگاہ نہیں کیا۔

جنوبی کوریا کے صدر مون جے نے قومی سلامتی کی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کر لیا ہے۔ امریکہ جنوبی کوریا اور جاپان نے شمالی کوریا کے نئے میزائل تجربے کی مذمت کرتے ہوئے پیانگ یانگ کے اقدام پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔رواں برس کے دوران شمالی کوریا کی جانب سے کیا جانے والا یہ اپنی نوعیت کا دسواں تجربہ ہے۔ 2016 میں اس پیونگ یانگ حکومت نے کل بارہ میزائل تجربے کیے تھے۔اس سے قبل شمالی کوریا نے چودہ مئی کو شمالی کوریا نے مغربی ساحل کے قریب ایک بیلسٹک میزائل داغا تھا۔ یہ میزائل کا یہ تجربہ جنوبی کوریا میں نئے صدر کے برسراقتدار آنے کے چند دن بعد کیا گیا تھا۔میزائل شمالی کوریا کے دارالحکومت پیانگ یانگ کے شمال مغربی شہر کسونگ کے قریب لانچ کیا گیا اور یہ سینکڑوں میل کے سفر کے بعد بحر جاپان میں گرا۔شمالی کوریا نے رواں برس سلسلہ وار میزائل ٹیسٹ کیے ہیں جس پر عالمی پیمانے پر خدشات نے سر ابھارا اور امریکہ کے ساتھ کشیدگی میں اضافہ ہوا۔شمالی کوریا نے گذشتہ ماہ بھی میزائل کے دو تجربات کیے تھے جو ناکام رہے تھے۔

گذشتہ ماہ شمالی کوریا کا ایک میزائل تجربہ مبینہ طور پر ناکام ہوا تھا جس کے بارے میں امریکہ اور جنوبی کوریا کا کہنا تھا کہ میزائل لانچ کے چند سیکنڈ بعد ہی پھٹ گیا۔شمالی کوریا نے حالیہ مہینوں میں کئی بار میزائل کے تجربات کیے ہیں اور چھٹا جوہری تجربہ کرنے کی بھی دھمکی دے رکھی ہے۔حالیہ ہفتوں کے دوران شمالی کوریا اور امریکہ کے درمیان شدید بیان بازی کے بعد کوریائی جزیرہ نما میں کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ نے شمالی کوریا پر گذشتہ سال مزید پابندیاں عائد کی تھیں۔یہ پابندیاں شمالی کوریا کی جانب سے چھ جنوری 2016 کو کیے گئے جوہری تجربے اور سات فروری کے سیٹلائٹ لانچ کے بعد عائد کی گئی تھیں۔

مزید :

بین الاقوامی -