”سعودی عرب میں ٹیکسی سفر کے دوران میں اپنے دوست سے ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب پر بحث کر رہا تھا کہ اچانک ڈرائیور نے ٹیکسی روک دی، دیکھا تو سامنے پولیس سٹیشن تھا کیونکہ باتوں کے دوران ہم نے۔۔۔“ شہری نے ایسی بات بتا دی کہ آپ کسی کے سامنے کبھی زبان نہ کھولیں

”سعودی عرب میں ٹیکسی سفر کے دوران میں اپنے دوست سے ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب پر ...
”سعودی عرب میں ٹیکسی سفر کے دوران میں اپنے دوست سے ٹرمپ کے دورہ سعودی عرب پر بحث کر رہا تھا کہ اچانک ڈرائیور نے ٹیکسی روک دی، دیکھا تو سامنے پولیس سٹیشن تھا کیونکہ باتوں کے دوران ہم نے۔۔۔“ شہری نے ایسی بات بتا دی کہ آپ کسی کے سامنے کبھی زبان نہ کھولیں

  

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر آپ بھی اوبر کی ٹیکسی سروس استعمال کرتے ہیں تو اس میں دوران سفر سیاست پر گفتگو سے گریز کریں ورنہ ان سعودی نوجوانوں کی طرح آپ کو بھی حوالات کی ہوا کھانی پڑ سکتی ہے۔ بحث و مباحثے کی ویب سائٹ reddit پر اس سعودی نوجوان نے اپنے ساتھ پیش آنے والا یہ انوکھا واقعہ بیان کیا ہے۔ اس نے لکھا ہے کہ گزشتہ دنوں میں اپنے ایک دوست کے ساتھ اوبر کی ٹیکسی میں سفر کر رہا تھا کہ ہم نے سیاست اور ڈونلڈٹرمپ کے دورہ¿ سعودی عرب پر گفتگو شروع کر دی۔

ڈرائیور ہماری گفتگو سن رہا تھا۔ اس نے اچانک گاڑی دوسری طرف موڑ دی اور ہمارے منع کرنے کے باوجود گاڑی غلط سمت میں چلاتا رہا۔ پہلے تو ہم سمجھے کہ وہ ہمیں اغواءکرنے والا ہے لیکن کچھ دور جا کر اس نے گاڑی پولیس کے پاس روک دی اور انہیں کہا کہ یہ لوگ سیاست پر گفتگو کر رہے تھے۔ اس پر پولیس نے ہمیں گرفتار کر لیا اور 24گھنٹے تک حوالات میں رکھا۔ مکمل پوچھ گچھ کے بعد ہی ہمیں رہائی مل سکی۔ اس سے سب کے باوجود ہمیں ڈرائیور کو بھی کرایہ ادا کرنا پڑااور وہ بھی زیادہ۔ کرایہ لے کر وہ تو آرام سے چلا گیا لیکن ہم حوالات میں ڈال دیئے گئے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -