دنیا میں سب سے بڑی تباہی کا آغاز ہو گیا، سینکڑوں میل تباہی ہی تباہی، سائنسدانوں نے وارننگ کر دی

دنیا میں سب سے بڑی تباہی کا آغاز ہو گیا، سینکڑوں میل تباہی ہی تباہی، ...
دنیا میں سب سے بڑی تباہی کا آغاز ہو گیا، سینکڑوں میل تباہی ہی تباہی، سائنسدانوں نے وارننگ کر دی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کو درپیش خطرات میں ماہرین گلوبل وارمنگ کو سرفہرست قرار دیتے آ رہے ہیں اور اب اس حوالے سے مزید ہولناک انکشاف سامنے آ گیا ہے جس نے دنیا کے درجنوں انتہائی اہم شہروں کے سمندربرد ہوجانے کی خبر سنا دی ہے۔ دی انڈیپنڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق امریکہ کی یونیورسٹی آف میساچوسٹس کے سائنسدانوں نے اپنی تحقیقاتی رپورٹ میں بتایا ہے کہ انٹارکٹکا کی میلوں پر محیط برف تیزی کے ساتھ پگھل رہی ہے اور اس کے پگھلنے کی شرح میں رواں صدی کے اختتام تک خطرناک حد تک اضافہ ہو جائے گا۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ ”انٹارکٹکا کی یہ برف پگھل کر سمندر میں شامل ہو رہی ہے جس سے سمندر کی سطح تیزی سے بلند ہو رہی ہے اور امکان پیدا ہو چکا ہے کہ عنقریب نیویارک، ممبئی، میامی اور شنگھائی سمیت دنیا کے کئی اہم ترین شہر سمندر برد ہو جائیں گے۔“ رپورٹ کے مطابق سائنسدانوں کے پاس تاحال برف کے پگھلنے کی رفتار کے متعلق حتمی ڈیٹا موجود نہیں ہے تاہم وہ یہ ڈیٹا حاصل کرنے کی سرتوڑ کوشش کر رہے ہیں۔لیکن کمپیوٹر کی پیش گوئی بتا رہی ہے کہ اگر دنیا میں تیل کی کھپت اسی رفتار سے جاری رہی تو انٹارکٹکا کی برف پگھلنے کی رفتار میں بتدریج تیزی آتی جائے گی اور رواں صدی کے اختتام تک سمندر کی سطح 6فٹ تک بلند ہو جائے گی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -