دہشت گرد وں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے پولیس کانسٹیبل کی نماز جنازہ ادا ،حملہ آوروں کی شناخت کرنے والوں کے لئے 25 لاکھ انعام کا اعلان

دہشت گرد وں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے پولیس کانسٹیبل کی نماز جنازہ ادا ...
دہشت گرد وں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے پولیس کانسٹیبل کی نماز جنازہ ادا ،حملہ آوروں کی شناخت کرنے والوں کے لئے 25 لاکھ انعام کا اعلان

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)کراچی کے علاقے دھوراجی میں دہشت گردوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے پولیس اہلکار راجا یونس کی نماز جنازہ گارڈن ہیڈ کوارٹر میں ادا کردی گئی، دوسری جانب دھوراجی میں پولیس موبائل پر فائرنگ میں استعمال ہونے والا اسلحہ اکیس فروری کی واردات سے میچ کرگیا، ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر نے حملہ آوروں کی شناخت کرنے  والوں کیلیے 25لاکھ روپے انعام کا اعلان، گورنر سندھ  اوروزیراعلیٰ مراد علی شاہ نے  پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی۔

نجی ٹی وی ’’92نیوز‘‘ کے مطابق کراچی کے علاقے دھوراجی میں دہشت گردوں کی فائرنگ کا نشانہ بننے والے شہید ہیڈ کانسٹیبل راجا یونس کی نماز جنازہ گارڈن ہیڈ کوارٹر میں ادا کردی گئی، پولیس کے دستے نے شہید کو سلامی پیش کی اور پھولوں کی چادر چڑھائی۔نماز جنازہ میں ایڈیشنل آئی جی کراچی،ایڈیشنل آئی جی سی ٹی ڈی، زونل ڈی آئی جیز، شہید کے ورثاء اور رینجرز افسران بھی شریک ہوئے۔اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کہنا تھا کہ  بزدل دہشت گرد پولیس کا حوصلہ پست نہیں کرسکتے،ایسا لگتا ہے کہ دہشت گردوں کے سلیپر سیلز نے واردات کی،واقعے میں ملوث دہشت گردوں کو جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔انہوں نے کہا واقعے کی جگہ سے9ایم ایم کے13اور30 بور پستول کے3خول ملے، گولیوں کے خول فرانزک ٹیسٹ کیلئے بھیجے جائیں گے۔ دوسری جانب دھوراجی میں استعمال ہونے والے اسلحہ اکیس فروری کو ہونے والی واردات سے میچ کرگیا، فارنزک رپورٹ میں سب کچھ واضح ہوگیا،رپورٹ کے مطابق 30  بور کے خول اکیس فروری کو گلستان جوہر میں سیکیورٹی گارڈ پر فائرنگ کی واردات سے میچ کرگئے ہیں جبکہ سی ٹی ڈی کے انچارج راجہ عمر خطاب کا کہنا ہے کہ حملے میں کالعدم تنظیم کے دہشت گرد ملوث ہیں۔انہوں نے بتایا کہ پولیس موبائل روزانہ اسی جگہ کھڑی ہوتی تھی، ملزمان نے کئی دن اہلکاروں کی ریکی کی اور پھر وردات کردی۔د وسری جانب گورنر سندھ محمد زبیر اوروزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کراچی میں پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے آئی جی سندھ سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔اتوار کوگورنر اور وزیراعلیٰ سندھ کی جانب سے پولیس اہلکاروں پر فائرنگ اور 2 اہلکاروں کی شہادت کا نوٹس لیا گیا۔ گورنر اور وزیراعلیٰ نے آئی جی سندھ کو رمضان سے قبل ٹارگٹ کلرز کے خلاف آپریشن کی ہدایت کی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ کا کہنا ہے کہ شہید اہلکاروں کے اہل خانہ کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ شہر میں ٹارگٹ کلنگ کیسے شروع ہوئی، امن وامان کی صورتحال خراب کرے والوں کے خلاف کارروائی تیزکی جائے۔

مزید :

کراچی -