ملک کا بڑا مسئلہ انرجی سکیورٹی ، سٹیک ہولڈرز کو مل کر کام کر نا چاہئے

ملک کا بڑا مسئلہ انرجی سکیورٹی ، سٹیک ہولڈرز کو مل کر کام کر نا چاہئے

سیالکوٹ ( خصوصی رپورٹ )پنجاب انرجی ایفیشنسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی (پیکا) انرجی ڈیپارٹمنٹ گورنمنٹ آف پنجاب کے زیر اہتمام "انرجی سکیورٹی کو یقینی بنانے کیلئے گورنمنٹ، تعلیمی اداروں اور انڈسٹری کے درمیان مضبوط روابط کا قیام " کے موضوع پر سیمیناریو ایم ٹی سیالکوٹ کیمپس میں ہوا، اس کا مقصدانرجی ایفیشنسی اینڈ کنزرویشن اور انرجی سکیورٹی کو یقینی بنانے کیلئے عوامی آگاہی کا حصول تھا ،جس میں مہمان خصوصی محمد فیصل افضل چیئرمین پیفما ، سعدیہ قیوم چیف انرجی اکانومسٹ پیکا ، سابق چئیرمین پی ایس جی ایم ای اے ارشد جاوید ساندل ، پروفیسر عارفین خان لودھی، اسد محمود ٹیکنیکل مینجر نیکا، ڈاکٹر عون حیدر چیئرمین الیکٹریکل ڈیپارٹمنٹ یو ایم ٹی سیالکوٹ سمیت دیگر شرکاء نے شرکت کی ۔ مقررین نے کہا کہ ملک کا سب سے بڑا مسئلہ توانائی ہے ہم سب کو مل کر اس مسئلے کے حل کے بارے میں کوشش کرنی چاہئے ،ہمیں حکومت اور دیگر اداروں کی جانب سے بتائے گئے انرجی ایفیشنسی کے ذرائع استعمال کرنے چاہیءں تا کہ کم سے کم انرجی استعمال کر کے زیادہ پیداوار حاصل کی جا سکے اور انرجی کے متبادل ذرائع اور انرجی ایفیشنٹ اپلائنسسز کے استعمال پر زور دیاجائے ۔ حاضرین نے پیکا کے کردار کو سراہتے ہوئے اس طرح کی عوامی آگاہی پروگرام کو جاری رکھنے پر زور دیا ۔مقررین کاکہنا تھا لوگوں کی پر سکون زندگی اور صنعت کے پہیے کو چلتا رکھنے کیلئے مطلوبہ انرجی کی فراہمی صرف اسی صورت ممکن ہے کہ انرجی کنزرویشن کوڈز پر عمل کیا جائے اور بجلی پیدا کرنے والے تمام ذرائع کو بروئے کار لایا جائے ،ترقی یافتہ ممالک میں اس سلسلے میں بہت سا کام کیا جا چکا ہے اور اب ہمارے ملک میں پنجاب وہ پہلا صوبہ ہے جہاں انرجی ایفیشنسی اینڈ کنزرویشن کے سلسلے میں عملی اقدامات کا آغاز ہو چکا ہے ۔پنجاب انرجی ایفیشنسی اینڈ کنزرویشن ایجنسی (پیکا) نہ صرف انرجی ایفی شینسی اور بلڈنگ کوڈز بنانے میں مصروف ہے بلکہ عوامی آگاہی کی مہم بھی چلا رہی ہے ۔اختتام پر شرکاء میں شیلڈز اور سرٹیفیکیٹ تقسیم کئے گئے ۔

پیکا

مزید : علاقائی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...