غذہ میں مظاہرے جاری ، اسرائیلی دہشتگردی سے زخمی مزید 2فلسطینی دم توڑ گئے

غذہ میں مظاہرے جاری ، اسرائیلی دہشتگردی سے زخمی مزید 2فلسطینی دم توڑ گئے

غزہ ،مقبوضہ بیت المقدس(صباح نیوز)فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں اسرائیلی دہشت گردی کے نتیجے میں زخمی ہونے والے مزید دو فلسطینی شہری شہید ہوگئے جس کے بعد 30 مارچ سے جاری پرتشدد تحریک میں قابض فوج کے حملوں میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 119 ہوگئی ۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق ہسپتال میں زیرعلاج 58 سالہ معین الساعی اور 20 سالہ محمد مازن علیان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔ دونوں چند روز قبل اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے وسطی غزہ میں البریج پناہ گزین کیمپ کے قریب زخمی ہوگئے تھے۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی فوج اور فلسطینی مظاہرین کے درمیان مشرقی سرحد پر تصادم ہوا تھا۔ علاوہ ازیں اسرائیلی فوج نے نے دعویٰ کیا ہے بیت المقدس میں فلسطینی مزاحمتی سیل گرفتار کرلیا ، گرفتار تینوں فلسطینی شہر میں یہودی آباد کاروں کو اغوا کرنے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے ۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق اسرائیلی فوج نے مقبوضہ بیت المقدس ایک کارروائی کے دوران متعد فلسطینیوں کو حراست میں لینے کا دعوی کیا ہے۔ قابض فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ گرفتار کیے گئے تین فلسطینی ایک مزاحمتی سیل کا حصہ ہیں جو شہر میں یہودی آباد کاروں اور اسرائیلی فوجیوں کو اغوا کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا تھا۔ گرفتار فلسطینیوں کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔دریں اثنااسلامی تحریک مزاحمت (حماس)کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ھنیہ نے غرب اردن کے عوام پر فلسطینی اتھارٹی کے سیکیورٹی اداروں کی طرف سے عائدکردہ پابندیوں کر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ غرب اردن کو آہنی سیکیورٹی شکنجے سے آزاد کیا جائے تاکہ وہ آزادی کی تحریک میں اپنا کردار ادا کرسکیں، غرب اردن کے عوام بھی بہادری ، جواں مردی اور جذبہ قربانی میں غزہ کے بھائیوں سے کم نہیں۔ ایک عوامی جلسے سے خطاب میں اسماعیل ھنیہ نے مزید کہا کہ غزہ میں فلسطینیوں کی تحریک حق واپسی نے پوری دنیا کو ہلاک کر رکھ دیا ۔ فلسطینی قوم کے پاک خون نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی صدی کی ڈیل کو ناکام بنا دیا ۔ اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کی طرف سے غزہ میں اسرائیلی جرائم کی تحقیقات کے لیے کمیشن قائم کرنے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہیں، انسانی حقوق کونسل کو نہ صرف غزہ میں اسرائیلی جرائم کی آزادانہ تحقیقات کرنی چاہیے بلکہ اس میں ملوث صہیونی مجرموں کے خلاف عالمی عدالتوں میں مقدمات کے قیام اور انہیں کٹہرے میں لانے کے لیے بھی اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔

فلسطینی

مزید : علاقائی