آزادکشمیر کا 1 کھرب، 5ارب سے زائد کا بجٹ آج پیش کیا جائے گا

آزادکشمیر کا 1 کھرب، 5ارب سے زائد کا بجٹ آج پیش کیا جائے گا

مظفرآباد(صباح نیوز )آزادکشمیر کا ایک کھرب 5ارب سے زاید کا مالی بجٹ 2018-19آج پیش کیا جارہا ہے۔وزیرخزانہ ڈاکٹر محمد نجیب خان نقی قانون ساز اسمبلی کے لاجنگ ہال میں بجٹ پیش کریں گے۔اجلاس کی صدارت سپیکر قانون ساز اسمبلی شاہ غلام قادر کریں گے۔اجلاس سے قبل آزادکشمیر کابینہ کا خصوصی اجلاس وزیراعظم آزادکشمیر کی زیر صدارت منعقد ہوگا جس میں فنانس بل 2018-19کی منظوری دی جائے گی۔قانون ساز اسمبلی کا اجلاس صبح دس بجے مظفرآباد میں طلب کیا گیا ہے جس کے لیے جملہ ممبران اسمبلی مظفرآباد پہنچ چکے ہیں جبکہ اپوزیشن نے حکومت ٹف ٹائم دینے کے لیے اپنی حکمت عملی بھی تیارکرلی ہے۔علاوہ ازیں وزیراعظم ہاوس آزاد کشمیرکے ترجمان نے واضح کیا ہے کہ وزیراعظم ہاوس کے اخراجات میں اضافہ نہیں کیا گیا ،روٹین کے اخراجات کو اضافی ظاہر کر کے چائے کی پیالی میں طوفان اٹھانے کی کوشش کی گئی مگر انہیں اس میں شدید مایوسی اور ناکامی ہو گی۔ اتوار کو ترجمان کے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم سیکرٹریٹ کے اخراجات میں اضافے کی میڈیا رپورٹ حقائق کے منافی ہے ۔ وزیراعظم کی جانب سے نافذ سخت مالیاتی ڈسپلن کی وجہ سے وزیراعظم سیکرٹریٹ کے اخراجات میں 5 کروڑ روپے کی بچت کی گئی۔صوابدیدی فنڈذ کا سو فیصد مستحق افراد کو دیا گیا جبکہ ماضی میں اس فنڈز سے ہونیوالے پرتعیش اخراجات کا زمانہ گواہ ہے ۔بیان میں کہا گیا ہے کہ جس طرح ہر وزارت اور محکمہ کے انتظامی اخراجات ہیں اسی طرح ایوان صدر اور ایون وزیراعظم کے بھی انتظامی اخراجات ہیں جن میں غیر ملکی مندوبین،پاکستان کے انتظامی وفود،روزمرہ کے اجلاسوں،وفود کی آمد ،مسلح افواج کے اداروں سے وفود کی آمد،ریاست بھر کے عوام کی آمد،مہاجرین کشمیر سمیت دیگر شعبہ زندگی سے پروفیشنلز کی آمد کا سلسلہ جاری رہتا ہے۔ سارے اخراجات کو جمع کر کے وزیراعظم کی ذات کو نشانہ بنانے کی کوشش کی گئی ہے ۔

کشمیر بجٹ

مزید : صفحہ آخر