مرکز کا بلوچستان سے رویہ درست نہیں، نگران وزیراعلیٰ کیلئے اپوزیشن سے رابطہ کر لیا، عبدالقدوس بزنجو

مرکز کا بلوچستان سے رویہ درست نہیں، نگران وزیراعلیٰ کیلئے اپوزیشن سے رابطہ ...

کوئٹہ(آن لائن)وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے کہا ہے کہ بلوچستان معاشی طور پر بہت کمزور ہے وفاقی پی ایس ڈی پی میں کئے گئے وعدے پورے نہیں کئے اگر یہی حالت رہی تو آئندہ دو تین سالوں میں ترقیاتی منصوبوں کے لئے پیسے نہیں ہونگے پاک افغان بارڈر پر باڑ لگانا دونوں ملکوں کے مفاد میں ہے، باڑ لگانے سے دہشت گردوں کو روکا جا سکے گا بھارت کے افغانستان میں قونصل خانوں کی بہتات ہے۔ چار سالوں سے این ایف سی ایوارڈ کا اجراء نہیں کیا وفاق نے صرف پنجاب کو ترقی دی بلوچستان کو اس کے حقوق نہیں دیئے سی پیک کے تحت بھی ہمیں کچھ نہیں ملاہم نے پانچ ماہ کے دوران عوام کو ریلیف دینے کے لئے اقدامات اٹھائے ہیں لیکن بعض معاملات میں بیورو کریسی نے رکاوٹ ڈالی لیکن اب ہم نے وہ نظام متعارف کرا دیا کہ آئندہ بیورو کریسی حکومت کے کسی کام میں رکاوٹ نہیں ڈال سکے گی ، ہم نے فائلوں میں ٹریکنگ سسٹم لگا دیا گیا ہے اس سے آئندہ آنیوالی حکومت کو فائدہ ہو گا، ان خیالات کا اظہا رانہوں نے کوئٹہ پریس کلب میں اظہار خیال کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پر بلال خان کاکڑ اور رضا الرحمان بھی موجود تھے۔ وزیراعلیٰ بلوچستان نے پریس کلب کے صدر کو ایک کروڑ روپے کا چیک بھی دیاانہوں نے مزید کہاکہ بلوچستان میں امن وامان صورتحال بہت خراب تھی لوگ باہر نہیں نکل سکتے تھے اور نہ ہی سڑکوں پر سفر ممکن تھا لیکن اب صورتحال میں بہت بہتری آئی ہے اس مقصد کے لئے فورسز نے بہت زیادہ قربانیاں دی اب ہم ان قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دینگے ۔مرکز کا رویہ بلوچستان کیساتھ درست نہیں ہے اقتدار سے نکل کر فوج کو بدنام کرنا نوازشریف کو وطیرہ ہے نگراں وزیراعلیٰ کے لئے اپوزیشن سے رابطہ کر لیا گیا ہے ،قومی اسمبلی میں بلوچستان کے لئے نشستیں بڑھائی جائیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول