بھارت میں مسلمان شہری کو سنگسار کردیا گیا، اس کا قصور کیا تھا؟ جان کر دنیا کا ہر مسلمان غصے سے آگ بگولا ہوجائے کیونکہ ۔۔۔

بھارت میں مسلمان شہری کو سنگسار کردیا گیا، اس کا قصور کیا تھا؟ جان کر دنیا کا ...
بھارت میں مسلمان شہری کو سنگسار کردیا گیا، اس کا قصور کیا تھا؟ جان کر دنیا کا ہر مسلمان غصے سے آگ بگولا ہوجائے کیونکہ ۔۔۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت میں مسلمانوں کا جو حال ہے اسے لفظوں میں کیونکر بیان کیا جا سکتا ہے۔ ایک دردناک عذاب ہے جسے یہ بے کس مسلسل سہنے پر مجبور ہیں۔ گائے تو شدت پسند ہندوﺅں کے لئے مقدس ہے لیکن مسلمان کے خون کی کوئی عزت و تکریم نہیں۔ کتنے ہی مسلمانوں کو گائے کے نام پر سرعام قتل کیا جا چکا ہے۔ اب ایک اور ایسا ہی دلخراش واقعہ پیش آ گیا ہے جس میں ایک مسلمان شہری کو شدت پسند ہندﺅوں نے گائے ذبح کرنے کا الزام عائد کرکے سربازار سنگسار کر کے موت کے گھاٹ اتاردیا ہے۔

مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق ریاست مدھیہ پردیش میں جمعرات کی رات گاﺅں امگارا کے قریب ریاض خان اور شکیل مقبول نامی مسلمان شہریوں کو لوگوں نے گائے ذبح کرنے کے الزام میں پکڑلیا۔ یہ واضح نہیں کہ ان کے پاس گائے تھا یا بیل، بہرحال دونوں کو ذبح کرنا بھارتی قانون کے مطابق جرم ہے۔ ریاست مدھیہ پردیش کے قانون کے مطابق گائے، بچھڑے، بیل وغیرہ کو ذبح کرنا سنگین جرم ہے۔ مقامی لوگوں نے اس واقعے کی اطلاع پولیس کو کرنے کی بجائے معاملہ اپنے ہاتھ میں لے لیا اور دونوں کو لرزہ خیز تشدد کا نشانہ بنایا۔

انڈین ایکسپریس کے مطابق مقامی پولیس اہلکار راجندرا پاتک کا کہنا تھا کہ لوگوں نے ریاض اور شکیل کو گائے ذبح کرتے ہوئے دیکھا تو وہ مشتعل ہوگئے۔ شدید تشدد کے باعث 45 سالہ ریاض موقع پر ہی ہلاک ہوگیا جبکہ شکیل کو شدید زخمی حالت میں ہسپتال پہنچایا گیا۔ پولیس نے اس واقعے کے بعد چار افراد کو حراست میں لیا ہے مگر معلوم نہیں ان کے خلاف کیا کاروائی ہو گی، کچھ کاروائی ہو گی بھی یا نہیں۔ دریں اثناءزخمی شکیل کا ہسپتال میں علاج جاری ہے اور ڈاکٹر کہتے ہیں کہ اب اس کی حالت خطرے سے باہر ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی