’اس ایک چیز سے انکار کرکے میں نے 25 کلو وزن کم کرلیا‘ نوجوان لڑکی نے وزن کم کرنے کا سب سے بہترین نسخہ بتادیا

’اس ایک چیز سے انکار کرکے میں نے 25 کلو وزن کم کرلیا‘ نوجوان لڑکی نے وزن کم ...
’اس ایک چیز سے انکار کرکے میں نے 25 کلو وزن کم کرلیا‘ نوجوان لڑکی نے وزن کم کرنے کا سب سے بہترین نسخہ بتادیا

  

نئی دلی(نیوز ڈیسک) بھارتی لڑکی دپیکا چوہان بھی ان لوگوں میں شامل ہیں جو کبھی اچھے بھلے ہوتے تھے مگر پھر موٹاپے نے ان کا حلیہ بگاڑ دیا۔ دیپکا البتہ اس حوالے سے خوش قسمت ہیں کہ انہوں نے موٹاپے کے سامنے شکست تسلیم کرنے کی بجائے اسے شکست دے ڈالی۔ ان کا وزن پہلے تو کچھ زیادہ نہیں تھا لیکن جب وہ کالج گئیں تو بازاری کھانوں کی شوقین ہوگئیں۔ ان دنوں وہ کافی زیادہ کھاتی تھیں اور باہر سے بکثرت کھانے کی وجہ سے ان کا وزن بہت زیادہ بڑھ گیا۔ دپیکا کو جب اپنے بڑھتے ہوئے وزن کی فکر لاحق ہوئی تو انہوں نے اسے کم کرنے کے لئے اپنی خوراک کی عادات کو بدلنے کا فیصلہ کیا اور محض تین ماہ میں ہی 25 کلو گرام کی کمی کر لی۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق دپیکا نے بتایا کہ ”ایک وقت پر میرا وزن 96کلوگرام سے زائد ہوچکا تھا۔ ہاسٹل کی زندگی، ضرورت سے زائد کھانا اور خاص طور پر بازاری کھانا میرے وزن میں اضافے کی وجہ تھی۔ ایک روز جب میں نے مشین پر اپنا وزن کیا تو 96.4 کلوکی ریڈنگ دیکھ کرمیں اپنی آنکھوں پر یقین نہ کرپائی۔ پہلے تو میں نے سوچا کہ شاید مشین خراب ہے لیکن پھر مجھے یہ تلخ حقیقت ماننا ہی پڑی کہ میرا وزن بہت زیادہ بڑھ چکا تھا۔ خوش قسمتی سے انہی دنوں مجھے ’کیٹو ڈائٹ‘ کے بارے میں سننے کو ملا اور میں نے اس پر عملدرآمد کرنے کے لئے ایک ہیلتھ گروپ کو بھی جوائن کرلیا۔ خوراک میں یہ ایک اور بنیادی تبدیلی ہی تھی جس کے باعث میں اپنا وزن کم کر پائی۔

میں اپنی صبح کا آغاز بلیک کافی سے کرتے تھی جبکہ ناشتے میں 100 گرام پنیر، کچھ مونگ پھلی، اخروٹ اور بادام کھاتی تھی۔ میرا رات کا کھانا 50 گرام پنیر، 50گرام پالک اور 50گرام کھمبیوں پر مشتمل ہوتا تھا۔ تین ماہ تک میں نے یہ ڈائٹ جاری رکھی جبکہ اس کے ساتھ باقاعدگی سے ورزش بھی کرتی رہی اور میرے وزن میں کل 25کلوگرام کی کمی ہوگئی۔

اب تو بعض اوقات ایسا بھی ہوتا ہے کہ کچھ لوگ مجھے پہچان ہی نہیں پاتے اور حیرانی سے پوچھتے ہیں کہ ”کیا تم وہی دپیکا ہو؟“وہ لوگ جو پہلے میرا مذاق اُڑاتے تھے اب میری تعریف کرتے ہیں۔ سب سے اہم بات یہ ہے کہ میں خود کو پہلے سے زیادہ خوش، مطمئن اور پراعتماد محسوس کرتی ہوں۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی /تعلیم و صحت