نگران وزیر اعظم اور وزرائے اعلیٰ کے کیلئے مرکز اور صوبوں میں ڈیڈ لاک تا حال برقرار

نگران وزیر اعظم اور وزرائے اعلیٰ کے کیلئے مرکز اور صوبوں میں ڈیڈ لاک تا حال ...
نگران وزیر اعظم اور وزرائے اعلیٰ کے کیلئے مرکز اور صوبوں میں ڈیڈ لاک تا حال برقرار

  

 لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)نگران وزیر اعظم کے نام پر حکومت اور اپوزیشن میں ڈیڈ لاک پید ہوگیا ہے ،دنیا نیوز کے سینئر تجزیہ کار کامران خان کے مطابق اگر کل ہونیوالے اپوزیشن لیڈر اور وزیر اعظم کی ملاقات میں یہ معاملہ حل نہ ہو سکا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی کے پاس جائے گا ۔ تفصیلات کے مطابق اس وقت میڈیا پر جتنے بھی نام نگران وزیراعظم کے حوالے سے گردش کر رہے ہیں ان پر کسی بھی جماعت کا دوسری سیاسی جماعت سے اتفاق نہیں ہے ۔اگر اپوزیشن لیڈر اور وزیر اعظم کے درمیان منگل کو ہونیوالی ملاقات میں یہ معاملہ حل نہ ہوا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی میں جائے گا جہاں حکومت اور اپوزیشن کی جانب سے کمیٹی میں شامل چار چارارکان کسی ایک نام پر متفق ہونے کی کوشش کریں گے اور اگر وہاں بھی یہ معاملہ حل نہ ہوا تو پھر چیف الیکشن کمشنر پارلیمانی کمیٹی کے زیر غور کسی ایک نام کا انتخاب کرکے نگران وزیراعظم کا اعلان کردیں گے ، پنجاب میں بھی نگران وزیراعلیٰ کیلئے یہ معاملہ حل نہیں ہو سکا ،تحریک انصاف کے اپوزیشن لیڈر نے تین مرتبہ وزیر اعلیٰ شہباز شریف کو ملاقات کیلئے درخواست بھیجی ہے لیکن ان کی جانب سے کوئی جواب نہیں دیا گیا ۔سندھ میں بھی حکومت اور اپوزیش کے درمیان اختلافات ہیں اور یہی کیفیت ہے جو اس وقت پنجاب میں ہے ، خیبر پختونخوا میں نگران وزیر اعلیٰ کیلئے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ملاقاتیں ہو چکی ہیں جن میں کچھ جنرلز اور ججز کے نام شامل ہیں اور ان کے ناموں پر حکومت اور اپوزیشن میں مشاور ت ہو رہی ہے ، کوئٹہ میں نگران وزیر اعلیٰ کیلئے ابھی تک حکومت اور اپوزیشن کے درمیان کوئی ملاقات نہیں ہوئی اور اس حوالے سے کوئی نام سامنے نہیں آیا حکومت اور اپوزیشن اپنے اپنے طور پر مشاورت جاری رکھے ہوئے ہیں ۔

مزید : اہم خبریں /قومی