سندھ کابینہ نے چار سے زائد اسلحہ رکھنے پر عائد پابندی ختم کر دی

سندھ کابینہ نے چار سے زائد اسلحہ رکھنے پر عائد پابندی ختم کر دی
سندھ کابینہ نے چار سے زائد اسلحہ رکھنے پر عائد پابندی ختم کر دی

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ کابینہ نے اسلحہ ایکٹ میں ترامیم کی منظوری دیدی ہے جس کے تحت اب ایک فرد کے 4 سے زائد اسلحہ رکھنے پر عائد پابندی ختم کر دی گئی ہے۔

صوبائی کابینہ کے اجلاس کے حوالے سے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وزیر اطلاعات ناصر شاہ نے کہا کہ کابینہ کا اجلاس وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت ہوا جس میں مختلف امور پر غور کیا گیا اور کئی اہم فیصلے کیے گئے۔ناصر شاہ نے بتایا کہ کابینہ نے اس بات کا سختی سے نوٹس لیا کہ بعض نجی سکولز گرمیوں کی تعطیلات میں بھاری فیس وصول کر رہے ہیں، کابینہ نے اس معاملے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ایسے سکولوں کے خلاف کارروائی کرنے کا فیصلہ کیا۔ایک سوال کے جواب میں ناصر حسین شاہ نے کہا کہ نجی سکولز کی اضافی فیسوں کو روکنے کے لیے قانو ن سازی کی جا رہی ہے۔ ناصر شاہ نے کہا کہ سندھ کابینہ نے وزیر تعلیم، سیکریٹری تعلیم اور دیگر افسران کو تعطیلات کی فیسوں کے معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ اضافی فیسوں کے معاملے پر والدین کے ساتھ زیادتی نہ ہو اور ان پر اضافی مالی بوجھ نہ پڑے۔صوبائی وزیر اطلاعات نے بتایا کہ سندھ کابینہ نے اسلحہ ایکٹ میں ترامیم کی منظوری دے دی ہے جس کے بعد اب کوئی بھی فرد جتنے چاہے لائسنس اور ہتھیار رکھ سکے گا، اسلحہ لائسنس کی کمپیوٹرائزیشن کرانے میں دسمبر 2018 تک توسیع کر دی گئی ہے۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ پنجاب کو بجٹ کا بڑا حصہ دیا گیا اسی سبب وہاں سماجی شعبے میں ترقی زیادہ نظر آرہی ہے۔

وزیر اطلاعات نے بتایا کہ سندھ کابینہ نے زراعت پر آبیانہ ختم کردیا ،آبیانہ کی جگہ زرعی اِنکم ٹیکس وصول کیا جائے گا، یہ سندھ کابینہ کا بڑا اہم فیصلہ ہے۔انہوں نے بتایا کہ زرعی اِنکم ٹیکس 50 ایکڑ یا 12 لاکھ روپے سالانہ آمدن پر وصول کیا جائے گا۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...