سپریم کورٹ، بوگس بلوں اور جعلی بھرتیوں کے الزام میں گرفتار ملزم کی درخواست ضمانت خارج

سپریم کورٹ، بوگس بلوں اور جعلی بھرتیوں کے الزام میں گرفتار ملزم کی درخواست ...
سپریم کورٹ، بوگس بلوں اور جعلی بھرتیوں کے الزام میں گرفتار ملزم کی درخواست ضمانت خارج

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے بوگس بلوں اور جعلی بھرتیوں کے الزام میں گرفتارملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں بوگس بلوں اور جعلی بھرتیوں کے الزام میں گرفتار ملزم کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی،ملزم محمد وقاص انجم کے خلاف قومی خزانے کو 4 کروڑ روپے نقصان پہنچانے کا الزام تھا، جسٹس عظمت سعید شیخ کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کی۔دوران سماعت وکیل نیب نے کہا کہ بوگس فارمزکے ذریعے جعلی بھرتیاں کی گئیں،وکیل ملزم نے کہا کہ جو ریکارڈ کمپیوٹر پر دستیاب تھا اس کے مطابق منظوری دی،جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ کیا پھر آپ کو چھوڑکر کمپیوٹر کو سزا دے دیں ،کہاں لکھا ہے کہ تصدیق نہیں کرنی صرف کمپیوٹر دیکھنا ہے،جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ کمپوٹر پر ریکارڈ تو 7 سال کا بچہ بھی دیکھ سکتا ہے،پھر 17گریڈ کے افسر کی کیا ضرورت ہے آپ گھر چلے جائیں ،

جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ 17 گریڈ کے افسر کا کام اپنا دماغ بھی استعمال کرنا ہے، عدالت نے ملزم کی درخواست ضمانت مسترد کر دی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد