کیا موجودہ معاشی صورتحال میں ڈالر خریدنا اور ذخیرہ اندوزی کرنا گنا ہ ہے ؟مفتی تقی عثمانی بھی میدان میں آگئے

کیا موجودہ معاشی صورتحال میں ڈالر خریدنا اور ذخیرہ اندوزی کرنا گنا ہ ہے ...
کیا موجودہ معاشی صورتحال میں ڈالر خریدنا اور ذخیرہ اندوزی کرنا گنا ہ ہے ؟مفتی تقی عثمانی بھی میدان میں آگئے

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن )ملک کے ممتاز اور جید عالم دین جسٹس ریٹائرڈ مفتی محمد  تقی عثمانی نے کہا ہے موجودہ صورت حال میں نفع کمانے کے لیے ڈالر خریدنا ملک کے ساتھ بے وفائی اور ذخیرہ اندوزی کی بنا پر گناہ ہے۔واضح رہے کہ اوپن مارکیٹ میں ڈالر ایک روپے اضافے کے ساتھ 153 روپے کا ہوگیا ہے۔روپے کی بے قدری کی ایک بنیادی وجہ لوگوں کی جانب سے ذخیرہ اندوزی کو بھی قرار دیا جا رہا ہے۔

ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت اور لوگوں کی جانب سےڈالرز ذخیرہ کرنے کی خبریں منظر عام پر آنے کے بعد ملک کے مشہور عالم دین مفتی محمد  تقی عثمانی کا کہنا ہے موجودہ صورت حال میں نفع کمانے کے لیے ڈالر خریدنا ملک کے ساتھ بے وفائی اور ذخیرہ اندوزی کی بنا پر گناہ ہے۔انہوں نے کہا کہ قیمت بڑھنے پر بیچنے کی نیت سے ڈالر خریدنا ذخیرہ اندوزی ہے جو کہ شرعا گناہ ہے جس پر روایت میں لعنت آئی ہے۔

مزید : قومی