میرے موکل پر جنسی زیادتی کا الزام کیوں لگایا؟ فیصل آباد کے وکیل نے سب کے سامنے خاتون کو پیٹ ڈالا

میرے موکل پر جنسی زیادتی کا الزام کیوں لگایا؟ فیصل آباد کے وکیل نے سب کے ...
میرے موکل پر جنسی زیادتی کا الزام کیوں لگایا؟ فیصل آباد کے وکیل نے سب کے سامنے خاتون کو پیٹ ڈالا

  


فیصل آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں لاقانونیت کا کیسا چلن ہے کہ جو شخص قانون اور آئین کا محافظ سمجھا جاتا ہے وہی اس کی سب سے زیادہ دھجیاں اڑاتا اور من مانی کرتا ہے۔ ذرا وکلاءکی اخلاقی ذمہ داریاں ذہن میں لائیں اور یہ خبر پڑھیں کہ فیصل آباد میں ایک وکیل نے عدالت میں سرعام ایک خاتون کو پیٹ ڈالا ہے اور اس کی اس بدمعاشی کی وجہ یہ تھی کہ اس خاتون نے ایک آدمی پر جنسی زیادتی کا مقدمہ درج کروایا تھا اور وہ ملزم اس وکیل کا مو¿کل تھا۔

اس موقع پر دو درجن سے زائد لوگ اور پولیس والے بھی موجود تھے لیکن وکیل کو کس کا خوف، کہ جسے خوف خدا نہ ہو، بندوں کا خوف کیا کرے گا۔ لوگوں اور پولیس اہلکاروں نے خاتون کو چھڑانے کی بہتیری کوشش کی لیکن یہ وکیل اپنی مردانگی کا سرٹیفکیٹ وہیں حاصل کرنے پر بضد تھا۔ اس واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہیں اور اکثر صارفین یہی سوال کرتے نظر آرہے ہیں کہ ان وکلاءکا ہاتھ کون روکے گا؟ یہ لاہور ہائی کورٹ کے معزز جج حضرات تک کو تشدد کا نشانہ بنا چکے اور انہیں ان کے چیمبرز میں بند کر چکے لیکن کوئی ان کا کچھ نہیں بگاڑ پاتا۔یہ رویہ کب تک چلے گا؟؟

مزید : علاقائی /پنجاب /فیصل آباد