چیئرمین نیب کی پریس کانفرنسز کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی،اپو زیشن جما عتیں ون پوائنٹ ایجنڈےپرسیا ست کررہی ہیں:مر تضیٰ وہاب

چیئرمین نیب کی پریس کانفرنسز کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی،اپو زیشن جما عتیں ون ...
چیئرمین نیب کی پریس کانفرنسز کوڈ آف کنڈکٹ کی خلاف ورزی،اپو زیشن جما عتیں ون پوائنٹ ایجنڈےپرسیا ست کررہی ہیں:مر تضیٰ وہاب

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور وزیر اعلیٰ سندھ کے مشیر بیرسٹر مر تضیٰ وہا ب نے کہا ہے کہ پیپلز پا ر ٹی حکومت بنا نے کیلئے کو ئی تحریک نہیں چلا رہی،اپو زیشن جما عتیں ون پوا ئنٹ ایجنڈے پر سیا ست کر رہی ہیں، پیپلز پا ر ٹی اپنے بل بو تے پر سیا ست کر ے گی ہمیں کسی بھی بیسا کھی کی ضرورت نہیں ہے، سیا ست دان تو 2015میں بھی ہما ر ے خلا ف تھے ، چیئر مین نیب کو پریس کا نفرنسز سے کا م نہیں چلا نا چا ہئے، ان کی پریس کا نفرنسز کو ڈ آف کنڈکٹ کی خلا ف ورزی ہیں احتسا ب کے عمل کو متنا زعہ بنا نے کی کو شش کی جا ر ہی ہے ،چیر مین نیب کو قو م کو بتا نا چا ہئے کہ بی آر ٹی پشا ور اور بلین ٹری کیس میں اب تک کیا تحقیقات کی گئی ہیں۔

سندھ اسمبلی میں میڈیا  سے گفتگو کر تے ہو ئےبیرسٹر مر تضیٰ وہا ب کا کہنا تھا کہ تبدیلی والی سر کا ر کو بنے ہو ئے دس ما ہ سے زائد کا عر صہ گز ر چکا ہے لیکن عوام کے مسائل میں مزید اضا فہ ہو ا ہے،غریب آدمی کو کوئی ریلیف نہیں دیاجارہا ،سٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق پاکستان کا قرضہ پینتیس ٹریلن ہے، جوحقائق سامنے آرہے ہیں وہ بہت خطرناک ہیں،میرا کپتان کہتاتھا کہ ایماندار قیادت آگئی ہے لیکن میرے کپتان نے معیشت کابیڑاغرق کردیاہے، اس کپتان نے کرکٹ کا بھی بیڑا غرق کردیا۔انہو ں نے کہا کہ ہم شرو ع سے کہتے آئے ہیں کہ عمران خان سے معیشت اور ملک سنبھلنے والا نہیں اور مو جو دہ صو ر تحا ل سب کے سامنے ہے ۔

بیرسٹر مر تضیٰ وہا ب نے کہا کہ شیخ رشید نے دعوی کیا تھا کہ انہوں نے ریلوے کوتبدیل کردیاہے،میں کہتا ہوں  کہ شیخ رشیدبڑی بڑی بونگیاں مارنا بند کریں،انہیں وزیر اطلا عا ت بننے کا شو ق ہے کیو نکہ قائمہ کمیٹی کے مطابق ریلوے میں بائیس ارب روپے کا خسارہ ہے، اس لئے میں سمجھتا ہو ں کہ شیخ رشید کوریلوے کا وزیرنہیں بلکہ ان کی کا ر کر دگی دیکھتے ہو ئے انہیں ڈی ایس ریلوے بھی نہیں ہوناچاہیے، شیخ رشیدنے ر یلوے میں کوئی انقلاب برپا نہیں کیا۔انہو ں نے کہا کہ جب عملی کام کرنے کا وقت آتاہے تو کہا جا تا ہے کہ ہمارے پاس وسائل نہیں۔ایک سوال کے جوا ب میں مر تضیٰ وہا ب نے کہا کہ پو لیس آر ڈر سے متعلق تفصیلا ت عدالت سے شئیر کرینگے ،قا نو ن سا زی سر کا ر ی ملا زم کا نہیں اسمبلی کا کا م ہے لیکن یہ تا ثر دیا جا رہا ہے کہ آئی جی کو قا نو ن سازی کا اختیا ر ہے ۔

انہو ں نے کہا کہ وفا قی وزار ت ریلوے نے سر کلر ریلوے چلا نے سے انکا ر کر دیا ہے کیونکہ وفا قی حکومت نے کہا ہے کہ ہما ر ے پا س سر کلر ریلوے چلا نے کے وسائل نہیں ہیں جبکہ سر کلر ریلوے چلا نے کے لئے سندھ حکومت نے بھر پو ر مدد کی ہےلیکن افسوس کے کل کے اجلاس میں شیخ رشید نے کہا ہے کہ سر کلر ٹرین سندھ حکومت چلا ئے گی، مجبور ہوکر وزیر ریل کو ایک بار پھر خط لکھا ہے، خط میں 102 ٹرین دینے اور عدالت کے حکم کی روشنی میں کام کو ماڈرنائیز کرنے کا کام سندھ حکومت کرے گی کا کہا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2016 سے سندھ حکومت سرکلر ریل کو بحال کرنے میں مصروف ہے،وزیر اعلی نے بیجنگ اجلاس میں اس منصوبے کو سی پیک میں شامل کرایا،اس معاہدے کا ثبوت خط کی صورت میں موجود ہے جس میں وفاق نے تمام کام میں ساتھ دینے کا وعدہ کیاہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی