حکومت پاکستان کو ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھانے کی ضرورت ہے: ڈاکٹر ضیاء اللہ خان داوڑ

حکومت پاکستان کو ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھانے کی ضرورت ہے: ڈاکٹر ضیاء اللہ خان ...
حکومت پاکستان کو ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھانے کی ضرورت ہے: ڈاکٹر ضیاء اللہ خان داوڑ

  

جدہ( محمد اکرم اسد / وقار نسیم وامق )پاکستانی ڈاکٹر جس طرح دنیا بھر میں کورونا کے علاج ومعالجے میں اپناکردار ادا کررہے ہیں، اسی طرح سعودی عرب میں بھی وہ اس سلسلے میں متحرک ہیں۔ایک پاکستانی ڈاکٹر ، ڈاکٹر ضیاء اللہ خان داوڑ ، جدہ میں سعودی عرب کی وزارت صحت میں بطور پبلک ہیلتھ سپیشلسٹ کے طور پر کام کررہے ہیں۔ وہ ایک مضبوط اور فعال مانیٹرنگ سسٹم ڈیزائن کرکے سعودی عرب میں کوویڈ 19 کا مقابلہ کرنے میں اپنا کردار ادا کررہے ہیں۔ وہ اس وبائی مرض سے لڑنے کے لئے قائم کردہ وزارت صحت کی ٹیم کے ایک سینئر ممبر ہیں۔

ان کی خدمات کا متاثر کن ریکارڈ ہے اور انہوں نے منا ، جمرات اور حرم شریف میں مختلف ممالک سے آنے والے عازمین کی خدمت کرکے سعودی وزارت صحت سے کئی تعریفی اسناد حاصل کی ہیں۔ یہ پاکستان کے لئے بڑے اعزاز کی بات ہے۔انھوں نے بتایا کہ سعودی حکومت نے جدہ میں تقریبا 37 مکمل طور پر فرنشڈ اور فنکشنل قرنطینہ مراکز قائم کیے ہیں جو بڑے ہوٹل ، نئی عمارتوں میں ہیں اور ان میں تمام سہولیات دستیاب ہیں۔ کچھ مراکز ایسے افراد کے قریبی رشتہ داروں کے لئے ہیں جن میں کورونا کی علامات مثبت ہیں اور کچھ مراکز ایسے افراد کے لئے ہیں جنکے علامات ابھی ظاہر نہیں ہوۓ اور کچھ ایسے افراد کے لئے ہیں جو بیرون ملک سے سفر کرکے پہنچے ہیں۔

سعودی حکومت کی تعریف کرتے ہوئے انھوں نے بتایا کہ شاہ سلمان اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی خصوصی ہدایات پر ،سعودی عرب میں کورونا کے تمام مریضوں، چاہے وہ غیر قانونی رہائشی کیوں نہ ہوں، کو یکساں ، معیاری اور مفت علاج فراہم کیا جارہا ہے۔انھوں نے کہا کہ سعودی عرب ہمارا دوسرا گھر ہے، لیکن ہمارا دل پاکستان کے لئے دھڑکتا ہے اور پاکستان سے آنے والی خبروں سے باخبر رہتے ہیں۔ کورونا کے حوالے سے ہماری حکومت بڑی اچھی اور مخلصانہ کوشش کر رہی ہے۔ مجھے خوشی ہے کہ زیادہ تر پاکستانی کورونا وائرس کو سنجیدگی سے لے رہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی بھائیوں کومشورہ دینا چاہتا ہوں ، کہ وہ سوشل ڈسٹینسنگ یعنی معاشرتی دوری اختیار کریں ، اور حکومت پاکستان کے جاری کردہ اصولوں پر عمل کریں۔ اب جب حکومت لاک ڈاؤن اٹھا رہی ہے تو پاکستان کے شہریوں پر ذمہ داری کئی گنا بڑھ گئی ہے۔ اگر آپ نے ذمہ داری کے ساتھ عمل نہیں کیا تو پاکستان غیر معمولی پیمانے پر صحت کے بحران کا شکار ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ حکومت پاکستان کو ٹیسٹنگ کی صلاحیت کو بڑھانے کی ضرورت ہے کیونکہ صرف ٹیسٹ کے ذریعے ہی حکومت کو اس صورتحال کی مکمل تصویر مل سکتی ہے۔ حکومت کو چاہئے کہ نظام صحت کو بہتر بنانے اقدامات کرے۔

مزید :

عرب دنیا -